بلدیاتی اداروں کی نا اہلی، جوڑیا بازار مسائلستان بن گیا

September 9, 2017 2:07 pmViews: 2

غلاظت کے ڈھیر ،گٹر ابل پڑے، سیوریج کا پانی جمع، سڑکیں ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں
واٹر بورڈ کی غفلت کے باعث دکاندار گندا پانی پینے پر مجبور ہیں، سیکریٹری جوڑیا بازار عثمان غنی
کراچی (رپورٹ افتخار احمد) اولڈ سٹی ایریا میں واقع روزانہ کروڑوں روپے کا کاروبار کرنے والا جوڑیا بازار بلدیاتی اداروں اور نمائندوں کی نااہلی کے باعث مسائلستان میں تبدیل ہوگیا۔ بارش اور عیدالاضحی کے بعد سے تاحال جوڑیا بازار میں غلاظت کے ڈھیر نظر آرہے ہیں جبکہ گٹر ابل پڑے ہیں اور سیوریج کا گندا پانی جگہ جگہ جمع ہے، سڑکیں ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں، دکاندار واٹر بورڈ کی نااہلی کی وجہ سے ایک گندے ٹینک سے پانی پینے پر مجبور ہیں، جہاں چوہوں اور بلیوں کا ہمیشہ راج ہے۔ جوڑیا بازار کے عہدیداران اپنی مدد آپ کے تحت بازار کی صفائی ستھرائی میں مصروف ہیں۔ عیدالاضحی کے بعد جگہ جگہ آلائشوں کے ڈھیر لگ گئے جس سے سخت تعفن اٹھ رہا ہے دکاندار تعفن زدہ ماحول میں بیمار پڑ گئے۔ بلدیاتی اداروں کی جانب سے کوئی کارکردگی سامنے نہیں آئی۔ جوڑیا بازار کے سیکرٹری عثمان غنی نے نمائندہ آغاز کو بتایا کہ ہر دکاندار سے خاکروب صفائی ستھرائی کے پیسے لیتا ہے، انہوں نے کہاکہ دو سال سے جو سیوریج لائنیں جوڑیا بازار میں ڈالی گئیں وہ اب چوک ہوگئی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ جوڑیا بازار کراچی کی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتا ہے، مگر حکومت سندھ ہمارے مسائل پر کوئی توجہ نہیں دے رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ دریا لال اسٹریٹ، خوشحالی لائن، ورجی اسٹریٹ، محمد فیروز اسٹریٹ، محمد شاہ اسٹریٹ، نیپئر روڈ، دایا لال اسٹریٹ سمیت دیگر جگہوں پر سڑکیں ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں۔ انہوں نے کہاکہ کراچی کی بڑی تاجر تنظیموں کے عہدیدار صرف الیکشن کے دوران ہمارے پاس آتے ہیں بعدازاں غائب ہوجاتے ہیں۔