روہنگیا مسلمانوں کی مدد کے لیے ساڑھے 7ارب روپے درکار

September 11, 2017 1:28 pmViews: 2

اقوام متحدہ نے امداد کی اپیل کردی، ہجرت کرنے والوں کیلئے عارضی پناہ گاہوں کی ضرورت ہے
میانمار سے دو لاکھ 94ہزار سے زائد مسلمان بے سروسامانی کی حالت میں ہجرت کرچکے ہیں
نیویارک (نیوز ایجنسی) اقوام متحدہ نے میانمار کی ریاست رخائن میں جاری مسلم کش فسادات کے نتیجے میں ہجرت کرنے والے روہنگیا مسلمانوں کی ضروریات پوری کرنے کے لیے ساڑھے 7 ارب روپے سے زائد امداد کی اپیل کردی۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق میانمار کی ریاست رخائن میں مقیم روہنگیا مسلمان ظلم و بربریت کے بعد اپنا علاقہ چھوڑ کر پڑوسی ملک بنگلادیش جانے پر مجبور ہیں۔ بنگلادیش میں موجود اقوام متحدہ کے نگراں اداروں کے مطابق اب تک میانمار سے 2 لاکھ 94 ہزار سے زائد افراد بے سروسامانی کی حالت میں سرحد عبور کرکے بنگلادیش آچکے ہیں۔ اقوام متحدہ کے مطابق پڑوسی ملک بنگلادیش میں پہلے ہی 4 لاکھ سے زائد روہنگیا مسلمان موجود ہیں، تاہم مزید لوگوں کے آجانے سے پہلے سے قائم کیمپوں میں لوگوں کو پناہ دینے کی گنجائش ختم ہوگئی ہے۔ اقوام متحدہ کا ادارہ برائے مہاجرین (یو این ایچ سی آر) کے مطابق پناہ گزینوں کی آمد کا سلسلہ جاری ہے، لہٰذا بنگلادیش حکومت سے درخواست کی گئی ہے کہ ان افراد کی رہائش کی خاطر کیمپوں کی تعمیر کے لیے انسانی حقوق کے اداروں کو مزید زمین مہیا کی جائے۔ ان کا کہنا تھا کہ یہاں پر پناہ گزینوں کے لیے عارضی پناہ گاہوں کی اشد ضرورت ہے، پناہ گزینوں کے کیمپوں میں اشیائے خورونوش کی شدید قلت ہے۔