حاجیوں کو مشکلات وفاقی وزیر مذہبی امور نے ذمہ داری سعودی عرب پر ڈال دی

September 11, 2017 2:17 pmViews: 3

جن پاکستانی حجاج کو ٹرانسپورٹ اور رہائش کی سہولتیں نہیں ملیں ان کو رقوم واپس دی جارہی ہیں
شکایات کی آزادانہ تحقیقات کیلئے تیار ہوں، رواں سال 105حاجی وفات پاگئے،سردار یوسف کی پریس کانفرنس
اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک/خبر ایجنسیاں) وفاقی وزیر مذہبی امور سردار یوسف نے سرکاری حج اسکیم کے تحت جانے والے حجاج کو درپیش مسائل اور مشکلات کی ذمہ داری سعودی حکومت اور ان کی کمپنیوں پر ڈالتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی کمپنیوں نے حج کے موقع پر ناقص انتظامات کیے تھے جس کی وجہ سے پاکستانیوں کو مشکلات درپیش آئیں، حج شکایات کی ناصرف آزادانہ تحقیقات کرانے کو تیار ہوں بلکہ اس میں جو بھی ذمہ دار ہوگا اس کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ اپنے دفتر میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر مذہبی امور سردار یوسف نے کہاکہ امسال پاکستان سے ایک لاکھ 79 ہزار سے زائد افراد فریضہ حج کے لیے سعودی عرب گئے تھے جن میں سرکاری حج اسکیم کے تحت ایک لاکھ 7 ہزار سے زائد حجاج تھے، انہوں نے بتایا کہ سرکاری سطح پر پاکستانی حجاج کے لیے بہترین انتظامات کیے گئے تھے اور سعودی عرب میں ٹرانسپورٹ اور کھانے سے متعلق جو شکایات سامنے آئیں ان کو موقع پر حل کرنے کی کوشش کی گئی، انہوں نے کہاکہ سعودی حکومت نے تمام ممالک کا حج کوٹہ بحال کردیا ہے لہٰذا امسال 23 لاکھ سے زائد افراد نے فریضہ حج ادا کیا، انہوں نے کہاکہ حجاج کی بہت زیادہ تعداد ہونے کی وجہ سے سعودی حکومت کی جانب سے کیے جانے والے انتظامات کم پڑ گئے، انہوں نے کہاکہ حج کے 5 دنوں کے انتظامات سعودی عرب کی جانب سے مقرر کردہ کمپنیوں کے ذمے ہوتے ہیں انہوں نے حجاج کو مناسب سہولتیں نہیں دیں، جن کی شکایت کی جاچکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جن پاکستانیوں کو ٹرانسپورٹ اور عزیزیہ میں قیام گاہیں نہیں ملیں ان سے لی جانے والی رقومات واپس کی گئی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ٹرانسپورٹ کی سہولت نہ ملنے والے 49 ہزار حجاج کو ڈھائی سو ریال فی کس واپس کررہے ہیں، انہوں نے کہاکہ جن حجاج کو عزیزیہ سے باہر ٹھہرایا گیا تھا انہیں فی کس تین سو ریال واپس کردیے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ امسال ایک سو پانچ حاجی وفات پاگئے، ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ نئی اور پرانی تمام حج کمپنیوں کا کوٹہ اس سال ختم ہوگیا آئندہ حج سے پہلے تمام کمپنیوں کو ایک پیمانے سے گزارنے کے بعد میرٹ پر کوٹہ الاٹ کیا جائے گا۔