آزادیٔ صحافت پر قدغن برداشت نہیں کرینگے، بلاول بھٹو

September 12, 2017 11:55 amViews: 3

متعلقہ اسٹیک ہولڈرز اور پارلیمان کو اعتماد میں لیے بغیر اقدامات لمحہ فکریہ ہیں
چیئرمین پی پی کی ن لیگ حکومت کی جانب سے کالے قوانین کے ذریعے میڈیا کی آواز دبانے کی کوشش پر تنقید
کراچی(اسٹاف رپورٹر)پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے نون لیگ حکومت کی جانب سے نئے کالے قوانین کے ذریعے میڈیا کی آواز کو دبانے کی کوششوں پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ متعلقہ اسٹیک ہولڈرز اور پارلیمان کو اعتماد میں لیئے بغیر اقدامات لمحہ فکریہ ہیں۔ اپنے جاری کردہ بیان میں پی پی پی چیئرمین نے کہا کہ پاکستان پرنٹ میڈیا ریگیولیٹری اتھارٹی آرڈیننس کا مسودہ حکومتی حلقوں میں زیرِ گردش ہے، جو سابق آمر ایوب خان کی جانب سے 60کی دہائی مین نافذ کردہ کالے قانون پریس اینڈ پبلیکیشن آرڈیننس کا چربہ ہے۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پی پی پی گذشتہ کئی دہائیوں سے آزادی صحافت کے لیئے جرنلسٹ کمیونٹی کے شانہ بشانہ لڑتی رہی ہے اور کسی صورت ایسا قانون نافذ ہونے نہیں دے گی جو آزادی صحافت پر قدغن ہو۔ انہوں نے نشاندہی کرتے ہوئے ہوئے کہا کہ وہ وزیراعظم شہید محترمہ بینظیر بھٹو ہی تھیں، جنہوں نے ضیاء رِجیم اور اس کے پیش رو آمروں کی جانب سے پریس کی آزادی کے خلاف بنائے گئے قوانین کو اٹھا کرپھینک دیا اور80کی دہائی میں پرنٹ میڈیا کو نئی وسعتیں دیں۔ پی پی پی چیئرمین نے میڈیا سے وابستہ افراد کو یقین دلایا کہ ان کی جماعت ان کے ساتھ کھڑی رہے گی ۔