میانمار میں بارودی سرنگ پھٹنے سے 3روہنگیان مسلمان شہید ٗ قتل عام بند کیا جائے ٗ اقوام متحدہ

September 12, 2017 2:44 pmViews: 3

حکومت اور روہنگیاں مسلمانوں کا قتل عام کررہی ہے ٗ صورتحا ل نسل کشی کرنے کی بدترین مثال ہے ٗ سربراہ انسانی حقوق کونسل
میانمار حکومت مسلمانوں پر مظالم بند اور ان کی مدد کرے ٗ دلائی لامہ ٗ جاری بحران پر تشویش ہے ٗ امریکہ
نیویارک (مانیٹرنگ ڈیسک) میانمار کی جانب سے سرحدی علاقے میں نصب کی گئی بارودی سرنگ پھٹنے سے 3 روہنگیا مسلمان شہید ہوگئے، یہ افراد بنگلادیش میں داخل ہونے آرہے تھے۔ واضح رہے کہ میانمار حکومت نقل مکانی کرنے والے روہنگیا مسلمانوں کا بھی قتل عام کررہی ہے، دوسری جانب اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے سربراہ نے کہا ہے کہ میانمار میں روہنگیا مسلمانوں کا نسلی طور پر صفایا کیا جارہا ہے۔ اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق زید ابن رعد حسین نے کونسل میں گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ میانمار حکومت روہنگیا مسلم اقلیت کو منظم انداز میں نشانہ بنا رہی ہے۔ زید ابن رعد حسین نے میانمار پر سفاکانہ فوجی آپریشن بند کرنے کے لیے زور دیتے ہوئے کہاکہ میانمار حکومت نے انسانی حقوق کے تفتیشی اہلکاروں کو متاثرہ علاقوں تک جانے کی اجازت دینے سے انکار کردیا ہے اس لیے وہاں کے حالات کا پوری طرح اندازہ نہیں لگایا جاسکتا، تاہم موجودہ صورتحال مسلمانوں کی نسل کشی کی بدترین مثال ہے۔ دوسری جانب تبت میں بدھ مت کے روحانی پیشوا دلائی لامہ نے کہا ہے کہ میانمار حکومت معصوم روہنگیا مسلمانوں پر مظالم بند اور ان کی مدد کرے کیونکہ بدھ مت کی یہی تعلیم ہے۔ میانمار میں روہنگیا مسئلے پر پہلی بار لب کشائی کرتے ہوئے نوبل انعام یافتہ دلائی لامہ نے میانمار حکومت پر زور دیتے ہوئے کہاکہ مظالم کے باعث نقل مکانی کرنے والے معصوم روہنگیا مسلمانوں کی مدد کی جائے کیونکہ بدھ مت کی یہی تعلیم ہے۔ مزید برآں امریکا نے بھی میانمار میں تشدد کے واقعات کی مذمت کی ہے، وائٹ ہائوس کے پریس سیکرٹری کا کہنا ہے کہ میانمار میں جاری بحران پر گہری تشویش ہے تشدد کے واقعات کی مذمت کرتے ہیں۔