عدالتوں کی منتقلی کیخلاف سٹی کورٹ میں ہڑتال

February 24, 2018 11:15 am0 commentsViews: 5

احتجاج کے دوران سٹی کورٹ کے تمام دروازوں پر تالے لگادیئے گئے، وکلاء کی جانب سے عدالتوں کا بائیکاٹ کیا گیا
عدالتوں کی شہر سے منتقلی پر وکلاء میں اشتعال پایا جاتا ہے، احتجاج جاری رکھیں گے، صدر کراچی بار حیدر امام رضوی
کراچی(اسٹاف رپورٹر) آج صبح کراچی بار ایسوسی ایشن کی اپیل پر سٹی کورٹ سے15 عدالتوں کی کورنگی جودیشل کمپلیکس منتقلی کیخلاف وکلاء برادری نے آج عدالتوں کا بائیکاٹ ہڑتال کردی۔ جس کے باعث سٹی کورٹ میں ہڑتال کے باعث عدالتی کارروائی مکمل طور پر معطل رہی۔ سٹی کورٹ کے تمام گیٹوں پر تالے لگادیئے گئے۔ وکلاء کے علاوہ کسی کو اندر جانے نہیں دیا گیا۔ عدالتوں میں ضروری کیسوں کیس سماعت جج صاحبان کے چیمبرز میں ہوگی۔ کراچی بار ایسوسی ایشن کے صدر حیدر امام رضوی نے روزنامہ آغاز سے بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ کراچی بار ایسوسی ایشن نے آج احتجاجاً ہڑتال کی ہے۔ سٹی کورٹ سے15 عدالتوں کی کورنگی جوڈیشل کمپلیکس منتقلی کیخلاف سخت احتجاج کریں گے۔ انہوں نے بتایا کہ سٹی کورٹ میں جس طرح عدالتوں کو یکجا رکھا گیا ہے اسی طرح دوسری جگہ پر اس قسم کے انتظامات کئے جائیں جہاں پر وکلاء اور سائلین کیلئے ٹرانسپورٹ و دیگر ضروری سہولیات موجود ہیں۔ ہم نے پرانی سبزی منڈی سمیت مختلف مقامات کی نشاندہی بھی کی ہے مگر ہم ایسی جگہ پر عدالتوں کی منتقلی کیخلاف جہاں ٹرانسپورٹ سمیت دیگر سہولیات موجود نہ ہوں اور وہ شہر سے باہر ہوں حیدر امام رضوی نے کہا کہ آج گیارہ بجے دن کو کراچی بار کے جنرل باڈی کا اجلاس ہورہا ہے جس میں وکلاء عدالتوں کی منتقلی کے بارے میں اپنی تجاویز دیں گے۔ معروف قانون دان صدیق کلاڈیا نے بتایا کہ عدالتوں کی منتقلی کے فیصلے سے وکلاء میں سخت اشتعال پایا جاتا ہے ہم اس قسم کے فیصلوں کو قبول نہیں کریں گے۔ احتجاج کرنا ہمارا حق ہے۔