وزیراعلیٰ کی بجٹ تقریر کے دوران متحدہ کا احتجاج

September 18, 2018 12:39 pm0 commentsViews: 7

شہری مسائل پر پلے کارڈ ز اور پوسٹرز اٹھا رکھے تھے ٗ ارکان کا 10منٹ تک احتجاج جاری رہا
اراکین کی پانی کا بحران ٗ جرائم میں اضافہ ٗ بچوں کے اغواء کیخلاف نعرے بازی
کراچی (اسٹاف رپورٹر) وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی بجٹ تقریر کے دوران متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے ارکان اسمبلی نے ایوان میں احتجاج کیا، ایم کیو ایم کے ارکان نے پلے کارڈ اور پوسٹرز اٹھا رکھے تھے جن پر شہر قائد میں پانی کی بلاتعطل فراہمی، جرائم کی بڑھتی ہوئی وارداتوں خصوصاً معصوم بچوں کے اغوا اور اسٹریٹ کرائم کے خلاف نعرے درج تھے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے جیسے ہی بجٹ تقریر کا آغاز کیا تو ایم کیو ایم کے ارکان اپنی نشستوں پر کھڑے ہوگئے اور انہوں نے پوسٹرز ایوان میں لہرائے، تاہم ایم کیو ایم کے پارلیمانی لیڈر کنور نوید جمیل اپنی نشست سے نہیں اٹھے۔ ایم کیو ایم کے ارکان کا مطالبہ تھا کہ کراچی کے کئی علاقوں میں کئی کئی ماہ سے پانی نہیں آتا، شہریوں کو پیاسا نہ مارا جائے۔ جبکہ دوسری جانب اسٹریٹ کرائم کا جن بے قابو ہو چکا ہے آئے روز درجنوں شہری موبائل فون، نقدی اور دیگر قیمتی اشیا سے محروم ہو جاتے ہیں لہٰذا اسٹریٹ کرائم کے واقعات پر فوری قابو پایا جائے، ایم کیو ایم ارکان نے تقریباً دس منٹ ایوان میں احتجاج کیا۔