اولڈ سٹی ایریا میں ٗ تجاوزات کیخلاف بڑا آپریشن

July 20, 2019 11:09 am0 commentsViews: 772

کے ایم سی انسداد تجاوزات کے عملے نے جمعہ کے روز کارروائی کے دوران درجنوں دکانیں اور ایک ٹریفک پولیس چوکی مسمار کردی
سپریم کورٹ کے احکامات کی روشنی میں کراچی کے تجارتی علاقوں سے تجاوزات اور غیرقانونی دکانوں کے خاتمے کیلئے کارروائی کا دوسرا مرحلہ شروع کردیا گیا ٗ اولڈ سٹی ایریا میں 350سے زائد دکانیں اور 10سے زائد کمرے توڑ دئیے گئے ٗ تاجروں کا اپنی ایسوسی ایشن کیخلاف احتجاج
لائٹ ہائوس پر لیڈی ڈفرن اسپتال کے قریب نالے پر بنائی گئی 280جھونپڑیوں نما دکانیں اور دیوار کے ساتھ بنائی گئی ٗ70دکانوں کو بھی مسمار کردیا گیا ٗ ریگل چوک پر 10سے زائد دکانوں کی وال فکسنگ کو ہٹا یا گیا ٗ پاسپورٹ آفس کے قریب بھی کارروائی کی گئی
کراچی (اسٹاف رپورٹر/مانیٹرنگ ڈیسک) کراچی میں سپریم کورٹ کے احکامات پر عملدرآمد کرتے ہوئے بلدیہ عظمیٰ کراچی کے محکمہ انسداد تجاوزات نے اولڈ سٹی ایریا میں غیر قانونی دکانوں اور تجاوزات کے خاتمے کے دوسرے مرحلے میں بڑا آپریشن شروع کر دیا۔ جمعہ کے روز اولڈ سٹی ایریا میں تجاوزات کے خلاف شروع ہونے والے آپریشن کے دوران کے ایم سی کے انسداد تجاوزات سیل نے اولڈ سٹی ایریا کے مختلف مقامات پر کارروائیاں کرتے ہوئے متعدد دکانوں اور ایک ٹریفک پولیس چوکی کو مسمار کردیا۔ تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ کے احکامات پر شہر سے تجاوزات کے خاتمے کے لیے آپریشن کے دوسرے مرحلے کا آغاز کر دیا گیا، جمعہ کے روز کے ایم سی کے انسداد تجاوزات سیل نے اولڈ سٹی ایریا کے مختلف مقامات پر کارروائیاں کرتے ہوئے 350 دکانیں، ایک ٹریفک پولیس چوکی، 10 سے زائد کمرے مسمار کرکے دیگر سامان ضبط کرلیا۔ کے ایم سی حکام کے مطابق سپریم کورٹ کے احکامات پر عملدرآمد کرتے ہوئے کے ایم سی کی انسداد تجاوزات سیل نے لائٹ ہاؤس کے دو مختلف مقامات پر نالے پر بنائی گئی 280 جھونپڑی نما دکانیں اور نجی اسپتال کی دیوار کے ساتھ بنی 70 دکانوں کو مسمار کیا۔ یہ دکانیں عرصہ دراز سے قائم تھیں، دکانیں مسمار کیے جانے کے خلاف دکانداروں نے لائٹ ہائوس مارکیٹ ایسوسی ایشن کے خلاف احتجاج کیا اور بینرز آویزاں کر دیے۔ دکانداروں کا کہنا ہے کہ ہم ہر ماہ ایسوسی ایشن کو ہزاروں روپے دیتے ہیں اس کے باوجود ہماری دکانوں کو ٹوٹنے سے بچانے کے لیے ہماری کوئی مدد نہیں کی گئی۔ دوسری طرف بلدیہ عظمیٰ کے حکام کا کہنا ہے کہ تجاوزات کے خلاف کارروائی جاری ہے، لائٹ ہائوس کے علاوہ غیرقانونی طور پر تعمیر کھارادر بخاری مسجد کے قریب چار سے زائد کمرے، کورنگی اور لانڈھی میں بھی 6 سے زائد کمروں کو مسمار کیا گیا۔کے ایم سی حکام کا کہنا ہے کہ کارروائی کے دوران صدر زینب مارکیٹ پر فٹ پاتھ پر بنی پولیس چوکی اور ریگل چوک پر 10 سے زائد وال فکسنگ دکانوں کو توڑ دیا گیا۔حکام کے مطابق صدر پاسپورٹ آفس کے قریب ٹھیلے، پتھارے اور دیگر سامان کو بھی ضبط کرلیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق جلد ہی لی مارکیٹ سے تجاوزات کے خاتمے کے لیے کارروائی شروع کی جائے گی۔