ماڈل ٹاؤن کیس میں نئی جے آئی ٹی بنانے کا حکم

December 6, 2018 11:15 am0 commentsViews: 2

مشتاق سکھیرا کو ملزم بنانے کے بعد تمام بیانات دوبارہ ہوں گے، عدالت کے ریمارکس
اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک) سپریم کورٹ نے ماڈل ٹاؤن کیس میں پنجاب حکومت کو نئی جے آئی ٹی تشکیل دینے کا حکم دیتے ہوئے نوٹس نمٹادیا۔ سپریم کورٹ میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں 5رکنی لارجر بنچ نے ماڈل ٹاؤن میں شہید ہونیوالی خاتون کی بیٹی کی درخواست پر سماعت کی۔ پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری سپریم کورٹ میں پیش ہوئے اور انہوں نے خود دلائل دیئے۔ طاہر القادری نے عدالت میں دلائل دیتے ہوئے کہا کہ واقعہ کے روز 10 افراد جاں بحق اور 71 زخمی ہوئے تھے۔ ہمارے اعداد و شمار کے مطابق510 افراد زخمی ہوئے۔اس موقع پر چیف جسٹس نے کہا کہ میں کہہ چکا ہوں اس ٹرائل کی روزانہ سماعت ہو‘ آپ نے درخواست دی کہ ہفتے میں دو دن سنیں۔ جسٹس آصف سعید نے کہا کہ مشتاق سکھیرا کو ملزم بنانے کے بعد تمام بیانات دوبارہ ہوں گے۔ پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ نے دلائل میں کہا کہ ٹرائل دوبارہ صفر کی سطح پر آگیا ہے۔ طاہر القادری کے بعد ان کی قانونی ٹیم کی جانب سے بھی دلائل دیئے گئے اور کہا گیا کہ مشترکہ تحقیقاتی ٹیم پر اعتماد نہ ہونے کے سبب گواہان پیش نہیں ہوئے۔