ڈکیتی مزاحمت اور اتفاقیہ گولی چلنے سے3 افراد زخمی ہوگئے

December 6, 2018 11:26 am0 commentsViews: 6

کراچی (کرائم رپورٹر ) شہر کے مختلف علاقوں میں فائرنگ کے واقعات میں 3افراد زخمی ہوگئے۔ تفصیلات کے مطابق ابراہیم حیدری کے علاقے بھٹائی کالونی میں نامعلوم ملزمان نے دوران ڈکیتی مزاحمت پر2 افراد40سالہ ارشاد علی ولد نصیر احمد اور25سالہ منظور احمد ولد محمد احمد کو فائرنگ کرکے زخمی کردیا اور موقع سے فرار ہوگئے، جنہیں طبی امداد کے لئے قریبی اسپتال لایا گیا۔ گلستان جو ہر کے علاقے بلاک نمبر14میں اپنی رائفل سے اتفاقیہ گولی چلنے سے نجی سیکورٹیکمپنی کا گارڈ25سالہ زین زخمی ہو گیا جسے طبی امداد کے لئے قریب اسپتال لایا گیا، تاہم پولیس کا کہنا ہے کہ زخمیوں کی حالت خطرے سے باہر بتائی جاتی ہے۔

گلشن حدید میں نامعلوم گاڑی کی ٹکر سے ایک شخص ہلاک
کراچی (کرائم رپورٹر) گلشن حدید میں نامعلوم گاڑی کی ٹکر سے ایک شخص جاں بحق جبکہ دوسرا زخمی ہوگیا۔ تفصیلات کے مطابق اسٹیل ٹاؤن کے علاقے گلشن حدید بوہری بابا کے مزار کے قریب نامعلوم تیز رفتار گاڑی کی ٹکر سے موٹر سائیکل سوار2نوجوان شدید زخمی ہو گئے جن کو فوری طور پر جناح اسپتال منتقل کیا گیا جہاں پر دوران علاج زخموں کی تاب نہ لاتے ہو ئے ایک نوجوان نے دم توڑ دیا، پولیس نے بتایا کہ اسپتال میں متوفی کی شناخت 17سالہ رزاق ولد محمد حسین اور زخمی کی15سالہ کاشف ولد علی داؤدکے نام سے کی گئی جو کہ گلشن حدید کے رہائشی تھے۔

حیدرآباد میں 7 سالہ بچی کی بوری بند لاش برآمد
حیدرآباد (مانیٹرنگ ڈیسک) حیدرآباد کے علاقے گلشن رئیس میں نہرکے کنارے سے گلا کٹی سات سالہ بچی کی بوری میں بند لاش برآمد ہوئی ہے جس کے بعد علاقے میں خوف و ہراس پھیل گیا۔ ایس ایس پی حیدرآباد سرفراز نواز شیخ نے جائے وقوعہ کا معائنہ کیا اور لاش کو پوسٹ مارٹم کے لیے سول اسپتال منتقل کردیا، تاہم لاش کی شناخت نہ ہوسکی۔

کلفٹن میں 2 بچوں کی ہلاکت بیکٹیریا کی وجہ سے ہوئی
کھانے میں بیکٹریاں ہلاکت کا سبب بنے لیبارٹری رپورٹ کے بعد موت کی وجوہات سامنے آگئیں
کراچی(کرائم رپورٹر) کلفٹن میں رہائش پذیر2کمسن بچوں کی اموات کی وجوہات سامنے آگئیں جس کے مطابق دونوں بچوں کی موت کھانے میں موجود بیکٹیریا کی وجہ سے ہوئی۔حکام کے مطابق3مختلف لیبارٹریوں سے کروائے جانے والے ٹیسٹ کے نتائج میں ’کھائے گئے کھانے میں بیکٹیریا‘ کی موجودگی کا انکشاف ہوا جو ان کی موت کا بھی سبب بنا۔پولیس کے قریبی ذرائع کا کہنا تھا کہ تفتیشی افسران کو باقاعدہ طور پر پنجاب فرانزک سائنس ایجنسی (پی ایف ایس اے) لاہور، جامعہ کراچی کے حسین ابراہیم جمال (ایچ ای جے) ریسرچ انسٹِیٹیوٹ آف کیمسٹری اور سندھ فوڈ اتھارٹی کی جانب سے ایک آزاد ادارے سے کروائے گئے کھانے کے تجزیے کی رپورٹ موصول ہوچکی ہے۔ذرائع کا مزید کہنا تھا کہ تینوں رپورٹس میں کسی قسم کے زہر یا سائنائیڈ وغیرہ کے استعمال کے امکان کو مسترد کیا گیا۔تاہم تینوں لیبارٹریوں کی رپورٹ میں بچوں کی کھائی ہوئی ٹافیوں اور چکن اسٹرپ میں بیکٹیریا کی نشاندہی کی گئی، جنہوں نے ٹافیاں ایک امیوزمینٹ پارک سے جبکہ چکن اسٹرپ زم زمہ کے ریسٹورنٹس سے کھائی تھیں۔