تحریک انصاف میں فاروڈ بلاک بنانے اور عمران خان کو ٗ مائنس کرنے کی سازش بے نقاب

December 10, 2018 1:15 pm0 commentsViews: 241

اپوزیشن سے تعلق رکھنے والے 3اہم رہنماتحریک انصاف سے تعلق رکھنے والے اراکین اسمبلی اور رہنماؤں سے رابطے کرکے فارمولے کی کامیابی کیلئے کام کررہے تھے
ملک کی ایک مذہبی سیاسی شخصیت اور دو بڑی سیاسی جماعتوں کے رہنما وفاق کی حکمران جماعت میں دراڑڈالنا چاہتے تھے فارورڈ بلاک بنانے کیلئے جن رہنماؤں کو پیشکش کی گئی تھی انہوں نے خود ہی وزیراعظم کو تمام صورتحال سے آگاہ کردیا
وفاق میں ناکام ہونے کے بعد سازشی عناصر نے پنجاب کی طرف رخ کرلیا ٗ صوبے میں تحریک انصاف کی اتحادی جماعت مسلم لیگ ق کے اراکین کو توڑنے کے منصوبے پر کام شروع کردیا ٗ اتحادی جماعت سے تعلق رکھنے والے صوبائی وزیر نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دیدیا
اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی دارالحکومت میں تحریک انصاف کی حکومت کیخلاف سازشوں کا سلسلہ زور پکڑ گیا ہے اپوزیشن سے تعلق رکھنے والے 3اہم رہنما تحریک انصاف کے اراکین اسمبلی اور اہم رہنماؤں سے رابطے کر کے حکمران جماعت میں فارورڈ بلاک بنانے اور مائنس عمران کے فارمولے پر کام کررہے تھے۔ وزیراعظم کے بااعتماد ساتھیوں نے سازش کو بے نقاب کردیا۔ مقامی ٹی وی چینل کی رپورٹ کے مطابق اپوزیشن جماعتوں کے 3رہنماؤں کی تحریک انصاف کے اندر فارورڈ بلاک بنانے اور مائنس عمران خان فارمولا کی کوشش کرنے کی سازش ناکام اور بے نقاب ہو گئی۔ رپورٹ کے مطابق اپوزیشن سے تعلق رکھنے والے تین اہم رہنما تحریک انصاف کے کچھ رہنماؤں اور ارکان اسمبلی سے رابطے کرکے فاروڈ بلاک بنانے اور مائنس عمران خان فارمولے پر کام کررہے تھے جن میں سے ایک مذہبی سیاسی شخصیت اور دو بڑی سیاسی جماعتوں کے رہنما شامل ہیں، کوشش کی جارہی تھی کہ کسی طرح تحریک انصاف کے کچھ اہم رہنماؤں اور اراکین اسمبلی کو اس بات کے لئے راضی کیاجائے کہ تحریک انصاف کی ہی حکومت رہے گی اور اپوزیشن بھی اس کو سپورٹ کرے گی مگر مائنس عمران خان فارمولا تیار کیاجائے اور عمران خان کی جگہ تحریک انصاف کی کسی اور شخصیت کو ملک کا وزیراعظم بنایاجائے تاہم جن رہنماؤں کو پیش کش کی گئی تھی انہوں نے خود ہی وزیراعظم عمران خان کو صورتحال سے آگاہ کر کے سازش کو بے نقاب کردیا جس کے بعد اپوزیشن رہنماؤں کا منصوبہ خاک میں مل گیا۔ ذرائع کے مطابق تحریک انصاف کے ان اراکین قومی اسمبلی کو مائنس عمران فارمولے پر عمل درآمد ہونے کی صورت میں اہم وزارتیں دینے کی پیش کش کی گئی تھی۔ ان اراکین نے وزیراعظم کو سازش سے آگاہ کردیا تاہم اب ان کوششوں کا رخ پنجاب کی جانب موڑ دیا گیا ہے اور پنجاب کی حکومت میں دراڑ ڈالنے کی کوشش کی جارہی ہے ہیں اور تحریک انصاف کی اتحادی جماعت مسلم لیگ کے اراکین کو توڑنے کے لئے کام ہورہا ہے گزشتہ دنوں مسلم لیگ ق سے تعلق رکھنے والے وزیر معدنیات پنجاب حمار یاسر نے کام میں مداخلت پر اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا۔ ذرائع کے مطابق پنجاب کے وزیر عمار یاسر وزارت سے مستعفی ہوگئے ہیں اور انہوں نے اپنا استعفیٰ پارٹی قیادت کو بھجوا دیا ہے۔ حافظ عمار یاسر نے مبینہ طور پر اپنے کام میں بے جا مداخلت پر استعفیٰ دیا ہے۔ حافظ عمار یاسر نے چوہدری شجاعت اور پرویز الٰہی کو بھیجے گئے اپنے استعفے میں کہا ہے کہ آپ نے وزارت کے لئے میرا نام تجویز کیا جس پر احسان مند اور شکر گزار رہوں گا۔ میں نے وزارت کا منصب ملک وقوم کی خدمت کے لئے قبول کیا تھا لیکن میری وزارت اور کام میں بلاوجہ رکاوٹیں کھڑی کی جارہی ہیں ، بے جا مداخلت کی وجہ سے اپنی وزارت میں پوری طرح کام نہیں کرپا رہا، جس کی وجہ سے وزارت سے استعفیٰ دے رہا ہوں۔