کراچی میں بھینسوں کے گوبر سے بسیں چلانے کی منصوبہ بندی

January 3, 2019 12:38 pm0 commentsViews: 9

منصوبہ 2020 سے فعال ہوگا، 200 بسیں بائیو میتھون سے چلیں گی، فنڈز سندھ حکومت اور ایشیائی ترقیاتی بینک فراہم کرینگے
زیرو اخراج والا گرین بس ریپڈ ٹرانزٹ نیٹ ورک انٹرنیشنل گرین کلائمنٹ فنڈ کی فنڈنگ سے منصوبہ شروع ہوگا
کراچی (نیٹ نیوز) ہوا تازہ رکھنے اور ماحولیاتی وارمنگ کا باعث بننے والی گیسوں کا اخراج کم کرنے کے لئے کراچی میں بائیو گیس سے چلنے والی بسیں متعارف کرائی جائیں گی۔ زیرو اخراج والا گرین بس ریپڈ ٹرانزٹ نیٹ ورک انٹرنیشنل گرین کلائمیٹ فنڈ کی فنڈنگ سے کراچی میں شروع ہو گا، جس کی 200بسیں بائیو میتھین سے چلیں گی۔ جسے کراچی کی 4لاکھ بھینسوں کا گوبر جمع کر کے تیار کیا جائے گا، یہ منصوبہ 2020سے فعال ہو گا، نیا بس سسٹم فضائی آلودگی اور شور کم کرنے میں معاون ثابت ہو گا، مگر کیا بسوں کی تعداد اتنی ہو گی جس سے شہر کے بیمار ٹرانسپورٹ سسٹم میں نئی جان پیدا ہو سکے۔ وزیراعظم کے مشیر برائے ماحولیات ملک امین اسلم نے بتایا کہ اقوام متحدہ کے تحت قائم گرین کلائمیٹ فنڈ ترقی پذیر ملکوں کو صاف ماحول کے فروغ کے لئے فنڈنگ کرتا ہے، کراچی پروجیکٹ کیلئے چار کروڑ 90لاکھ ڈالر فراہم کرے گا، جبکہ پروجیکٹ کی کل لاگت 58کروڑ 35لاکھ ڈالر ہے ، باقی فنڈز ایشیائی ترقیاتی بینک اور سندھ حکومت فراہم کریں گے۔ پروجیکٹ سے 3200ٹن گوبر روزانہ سمندر کی نذر ہونے کے بجائے بائیو گیس پلانٹ پر توانائی اور کھاد کی تیاری کیلئے استعمال ہو گا، 50ہزار گیلن تازے پانی کی بھی بچت ہو گی جو اس وقت ساحل پر ویسٹ کی صفائی کے لئے استعمال ہوتا ہے۔