شادی ہالز توڑنے سے کسی کو نہیں روک سکتے، سندھ ہائی کورٹ

January 10, 2019 1:14 pm0 commentsViews: 2

سپریم کورٹ نے شہر بھر میں رفاعی پلاٹوں پر شادی ہالز ختم کرانے کا حکم دے دیا ہے
اورنگی ٹاؤن میں ایس بی سی اے کے ماسٹر پلان کے مطابق شادی ہالز تعمیر کئے گئے، درخواست گزار
کراچی (اسٹاف رپورٹر) سندھ ہائی کورٹ نے رفاعی پلاٹوں پر قائم شادی ہالز کیخلاف آپریشن سے متعلق دائر درخواست پر ایس بی سی اے سے 18جنوری تک ماسٹر پلان طلب کرلیا۔ بدھ کو جسٹس محمد شفیع صدیقی پر مشتمل 2رکنی بنچ نے رفاعی پلاٹوں پر قائم شادی ہالز کے خلاف آپریشن سے متعلق کامران خان کی جانب سے دائر درخواست کی سماعت کی۔ سماعت کے موقع پر درخواست گزار کے وکیل نے عدالت کو آگاہ کیا کہ اورنگی ٹاؤن سیکٹر 13میں ماسٹر پلان ڈپارٹمنٹ سے اجازت کے بعد شادی ہال تعمیر کیا اور ایس بی سی اے شادی ہال توڑنا چاہتی ہے۔ لہٰذا ایس بی سی اے کو اس اقدام سے روکاجائے۔ اس موقع پر جسٹس محمد شفیع صدیقی نے ریمارکس دیے کہ شہر بھر میں رفاعی پلاٹوں سے شادی ہال سپریم کورٹ نے ختم کرنے کا حکم دیا ہے ہائی کورٹ سپریم کورٹ کے حکم نامے میں کیسے مداخلت کرسکتی ہے۔ شادی ہالز کیخلاف کارروائی روک کر ہم آپریشن میں کیسے مداخلت کرسکتے ہیں۔ کراچی میں تجاوزات کیخلاف آپریشن تو جاری رہنا چاہیے بعدازاں فاضل عدالت نے ایس بی سی اے سے 18جنوری تک ماسٹر پلان طلب کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔