سندھ اسمبلی نے گیس کی لوڈشےڈنگ کیخلاف مورچہ لگالیا ٗ وفاقی حکومت کیخلاف شدید احتجاج

January 11, 2019 12:58 pm0 commentsViews: 3

صوبے میں گیس کی لوڈشےڈنگ فوری ختم کی جائے دوسری صورت میں احتجاج کا دائرہ وسیع کیا جائیگا ٗ امید ہے وفاقی حکومت سندھ کو اس کااپنا حق دے گی
ہم وفاقی حکومت کے ساتھ مل کر کام کرنا چاہتے ہیں ٗ اگر ساتھ نہیں دینگے تو صوبے کے مسائل حل نہیں ہونگے ٗ کچھ لوگوں کو سندھ حکومت کھٹکتی ہے ٗ متفقہ قرار داد پیش
کراچی ( اسٹاف رپورٹر) سندھ اسمبلی نے صوبے میں گیس کی بدترین لوڈشیڈنگ پر شدید احتجاج کرتے ہوئے اپنی ایک متفقہ قرار داد کے ذریعے وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ سندھ میں گیس کی لوڈشیڈنگ فوری ختم کی جائے دوسری جانب احتجاج کا دائرہ وسیع کیاجائے گا۔ جمعرات کو گیس کی بندش کے خلاف مذمتی قرار داد ایم کیو ایم کے رکن اسمبلی محمد حسین نے پیش کی۔ وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے گیس لوڈشیڈنگ سے متعلق قرار داد پراظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ مشترکہ مفادات کونسل کا ایک اجلاس 24دسمبر کو ہوا تھا۔ ہم نے وفاقی حکومت کو لکھا کہ گیس کا ایجنڈا شامل کریں۔ قرار داد کے محرک محمد حسین نے کہا کہ قرارداد گیس بندش آئین کے آرٹیکل 1558کی خلاف ورزی ہے۔ قرارداد کی پیپلزپارٹی اور جی ڈی اے نے بھی حمایت کی، اپوزیشن لیڈر فردوس شمیم نقوی نے کہا کہ صوبے کے حقوق کے لئے بات کرنا ہماری ذمہ داری ہے گیس کا حق پہلے سندھ کا ہے۔ ایم کیو ایم رکن خواجہ اظہار الحسن نے کہا کہ کراچی کی بات اس لئے زیادہ کرتے ہیں کیونکہ کراچی کی صنعتیں متاثر ہونے سے معیشت متاثر ہو گی۔ وزیراعلیٰ سندھ سی سی آئی اجلاس میں گیس بھی مانگیں۔ گیس والے شکایت پر بھی نہیں آئے اور مسئلہ حل نہ ہوا تو میں اپنے حلقے کے لوگوں کے ساتھ گیس دفتر کے باہر دھرنا دوں گا۔