فوڈ اتھارٹی کا ایکشن کراچی میں 6 ہزار ریسٹورنٹس اور ہوٹلز کیخلاف کریک ڈائون

March 12, 2019 12:45 pm0 commentsViews: 4

کارروائی کے دوران غیر معیاری کھانا بنانے میں ملوث مالکان کو 40 لاکھ روپے جرمانہ، 17 ہوٹلز کیخلاف مقدمات درج کرلئے گئے
انسانی جانوں سے کھیلنے میں ملوث مالکان سزا اور جزا کے عمل سے بچ نہیں سکیں گے، سخت کارروائی عمل میں لائی جائے گی، ڈائریکٹر فوڈ اتھارٹی
کراچی (نیوز ڈیسک) صوبائی محکمہ فوڈ اتھارٹی نے کراچی میں 6 ہزار سے زائد ریسٹورنٹس، ہوٹلز، یوٹیلٹی اسٹورز کے خلاف کریک ڈائون شروع کردیا اور خبردار کیا ہے کہ انسانی جانوں سے کھیلنے میں ملوث مالکان سزا اور جزا کے عمل سے بچ نہیں سکیں گے اور ان کے خلاف سنگین نوعیت کی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ ڈائریکٹر فوڈ اتھارٹی کراچی ابرار احمد شیخ نے بتایا کہ گزشتہ ایک سال کے دوران کراچی میں بڑی تعداد میں ہوٹلز کے خلاف آپریشنل کارروائی عمل میں لائی گئی ہے تاہم غیر معیاری کھانے میں ملوث ہوٹلز مالکان کو 40 لاکھ روپے جرمانہ عائد کرکے وصول کی جانے والی مذکورہ رقم قومی خزانے میں جمع کرا دی ہے جبکہ شہریوں کو کھانے کے نام پر زہر کھلانے والے 17 ہوٹلز ریسٹورنٹس مالکان کے خلاف مقدمات درج کرائے گئے ہیں تاہم سندھ فوڈ اتھارٹی کا مقصد کسی کے روزگار سے کھیلنا نہیں بلکہ 2 کروڑ سے زائد شہریوں کو معیاری خوراک کی فراہمی کو یقینی بنانا ہے۔ عرصہ 60 سال سے خوراک کے نام پر شہریوں کی جانوں سے کھیلنے والوں کو درست کرنے میں وقت درکار ہے اور مذکورہ ہوٹلز مالکان راتوں رات امیر بننے کے لیے انسانی جانوں کو قربانی کا بکرا بنانے کی دوڑ میں رہتے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ مضر صحت خوراک کے استعمال سے کئی خاندان موت کی نیند سو چکے ہیں اور شہر کی بڑی آبادی کئی امراض میں مبتلا ہوکر مقامی اسپتالوں کے حوالے ہو چکی ہے۔ اس طرح ہر دوسرا شہری کسی نہ کسی بیماری میں مبتلا ہو چکا ہے۔ ڈائریکٹر فوڈ اتھارٹی کے مطابق ہوٹلز کو لائسنس کی فراہمی اس وقت تک نہیں دے سکتے جب تک وہ اپنے معیار کو سو فیصد یقینی نہیں بناتے۔