سندھ میں 70 فیصد سے زائد لوگ ٹائیفائیڈ میں مبتلا

March 12, 2019 12:53 pm0 commentsViews: 1

بچے ٹائیفائیڈ و دیگر بیماریوں سے مر رہے ہیں، آئندہ ماہ سے انسداد ٹائیفائیڈ مہم شروع کی جائے گی
حکومت سندھ 100 بلین روپے صحت کے شعبے پر خرچ کر رہی ہے، سیکریٹری صحت سعید اعوان، ٹیپو سلطان، منہاج قدوائی و دیگر کا خطاب
کراچی (اسٹاف رپورٹر) سندھ میں 70 فیصد سے زائد لوگ ٹائیفائڈ میں مبتلا ہیں، افسوسناک صورتحال یہ ہے کہ بچے ٹائیفائڈ اور دیگر بیماریوں سے مر رہے ہیں جس کی اہم وجہ سیوریج کا پانی صاف پینے کے پانی میں مکس ہو رہا ہے۔ 40 سال پہلے جو پانی شہر کو فراہم ہوتا ہے آج ایسی کوئی جگہ نہیں جہاں صاف پانی آرہا ہو۔ ان خیالات کا اظہار پی ایم اے کے تحت سیمینار سے پروفیسر ٹیپو سلطان، ڈاکٹر غلام فاطمہ و دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے سیکرٹری صحت سندھ سعید اعوان نے کہاکہ شہر میں انسداد ٹائیفائڈ مہم آئندہ ماہ چلائی جائے گی۔ عوام کو اس سلسلے میں آگاہی فراہم کی جائے گی، انہوں نے کہاکہ حیدرآباد اور دیگرشہروں میں لیڈی ہیلتھ ورکرز کے ذریعے آگاہی کا پروگرام گھر گھر پہنچایا جارہا ہے تاکہ عوام کو ٹائیٹائڈ اور دیگر بیماریوں سے بچایا جاسکے۔ انہوں نے کہاکہ ٹائیفائڈ تیزی سے پھیل رہا ہے مگر سندھ حکومت روک تھام کے لیے کوئی اقدامات نہیں کررہی۔ ہم میڈیا میں اس کی تشہیر اس وجہ سے نہیں کررہے کیونکہ یہ اب تک خطرناک حد تک نہیں پہنچا۔ انہوں نے کہاکہ سندھ حکومت نے 100 بلین روپے صحت کے شعبے کے لیے رکھے ہیں۔ سیمینار سے چیف ایگزیکٹو آفیسر سندھ ہیلتھ کیئر کمیشن ڈاکٹر منہاج قدوائی، ڈاکٹر سجاد قیصر، ڈاکٹر واثق، ڈاکٹر شورو نے بھی خطاب کیا۔ سیمینار میں عوام سے ٹائیٹائڈ و دیگر بیماریوں سے بچائو کے لیے احتیاطی تدابیر اختیار کرنے پر زور دیا گیا۔