بلاول کی سندھ اسمبلی آمد پر اپوزیشن کا بائیکاٹ

March 14, 2019 11:27 am0 commentsViews: 7

ایوان نے گیس ، بجلی اور پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کی مذمتی قرار داد منظور کرلی
ایم ایم اے رکن عبدالرشید ایوان میں تنہا موجود، پیپلز پارٹی اور ایم کیو ایم پر طنزیہ جملے برسائے
کراچی ( اسٹاف رپورٹر )سندھ اسمبلی کے اجلاس میں صوبائی وزیر اویس قادر شاہ نے کہا ہے کہ کراچی سرکلر ریلوے کے مجوزہ ٹریک کے ایک بڑے علاقے کے دائیں جانب پر تجاوزات قائم ہیں ۔کے سی آر کا آپریشن 1999 میں وزارت ریلوے نے بند کیا تھا۔ کے سی آر پر توجہ نہ دینے سے یہاں تجاوزات قائم ہوئیں، جبکہ اسمبلی میں بجلی، گیس اور پیٹرولیم مصنوعات میں اضافے کے خلاف اور سندھ کے ہیرو ہوش محمد شیدی کو خراج عقیدت پیش کرنے کی دونوں قراردایں متفقہ طور پر منظور کر لی گئیںاور اپوزیشن نے دوسرے روز بھی ایوان کا بائیکاٹ جاری رکھا۔بدھ کو سندھ اسمبلی کا اجلاس ساڑھے 3 گھنٹے تاخیرسے 4 بجکر 30منٹ پر ڈپٹی اسپیکر سندھ اسمبلی ریحانہ لغاری کی صدارت میں شروع ہوا۔ اجلاس میں یہ تاخیر پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو کی سندھ اسمبلی آمد کے باعث ہوئی ،کیونکہ پیپلزپارٹی کے ارکان کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس بلاول بھٹو کی صدارت میں ہورہا تھا ،جبکہ تحریک انصاف ، ایم کیوایم پاکستان اور جی ڈی اے کے ارکان بائیکاٹ پر تھے۔ ایوان میں تقریباً 2 گھنٹے تک ایم ایم اے کے واحد رکن سید عبدالرشید ایوان میں تنہا موجود رہے ہیں۔اجلاس میں تلاوت قرآن پا ک اور نعت شریف کے بعد فاتحہ ہوئی۔