فواد چودھری کی پنجاب اسمبلی کے فیصلے کی حمایت کے بعد مخالفت

March 14, 2019 2:42 pm0 commentsViews: 7

اسلام آباد: وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری نے بھی پنجاب اسمبلی میں ارکان کی تنخواہوں اور مراعات میں اضافے کی حمایت کے بعد وزیر اعظم کا بیان آنے پر یو ٹرن لیتے ہوئے فیصلے کی مخالفت کردی۔ ذرائع ابلاغ کے مطابق اسلام آباد میں وکلا کی تقریب کے موقع پر وفاقی وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ ارکان اسمبلی کی تنخواہیں بہت کم تھیں جنہیں 80ہزار سے بڑھا کر ڈیڑھ لاکھ روپے کیا گیا ہے۔ اگر ہم تنخواہوں میں اضافہ نہیں کریں گے تو متوسط طبقہ والے انتخابات میں حصہ ہی نہیں لیں گے۔

بعد ازاں وزیر اعظم کی جانب سے پنجاب اسمبلی کے اقدام کی مخالفت پر وفاقی وزیر اطلاعات نے یو ٹرن لیتے ہوئے موقف تبدیل کرتے ہوئے وزیراعلیٰ اور پنجاب اسمبلی کے خود کو نوازنے کے اقدامات کو وزیراعظم اور وفاقی حکومت کی پالیسیوں سے متصادم قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ شاید پنجاب کے حکمران وزیر اعظم اور وفاقی حکومت کی پالیسیوں سے واقف نہیں۔ اس پالیسی پر فوری نظرثانی کی جانی چاہیے۔

واضح رہے کہ پنجاب حکومت نے گزشتہ روز عوامی نمائندگان ترمیمی بل 2019ء منظور کیا جس کے تحت اراکین اسمبلی کی تنخواہوں میں اضافہ کیا گیا ہے ساتھ ہی سابقہ ارکان صوبائی اسمبلی کو بھی طبی مراعات دی گئی ہیں۔