آغا سراج درانی کے جسمانی ریمانڈ میں پھر توسیع

March 21, 2019 1:44 pm0 commentsViews: 15

کراچی: نیب عدالت نے پیپلز پارٹی کے رہنما اور اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کے ریمانڈ میں ایک بار پھر توسیع کردی۔ میڈیا ذرائع کے مطابق قومی احتساب بیورو کے حکام کی جانب سے آغا سراج درانی کو نیب عدالت میں پیش کیا گیا جہاں دوران سماعت اسپیکر سندھ اسمبلی نے کہا کہ میرے خاندان کو ملزم بنایا جا رہا ہے، جس پر عدالت نے کہا کہ آپ اپنے بارے میں بتائیں۔

آغا سراج درانی نے عدالت کو بتایا کہ مجھے ایک چھوٹے سے کمرے میں رکھا گیا ہے، جہاں روشنی ہے اور نہ کوئی اخبار یا ٹی وی۔ گھر والوں سے ملنے نہیں دیا جاتا۔ میرے باورچی کو بھی پکڑ لیا گیا ہے۔ دوران سماعت نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ باورچی کے اکاؤنٹ میں بڑی بڑی ٹرانزیکشن ہوئی، اس لیے اسے پکڑا گیا ہے۔ نیب پراسیکیوٹر نے استدعا کی کہ ملزم سے مزید تفتیش درکار ہے، لہٰذا 15 روز کا جسمانی ریمانڈ دیا جائے ۔

عدالت نے نیب کی 15 روز کی استدعا مسترد کرتے ہوئے ملزم کا 10 روزہ ریمانڈ دیتے ہوئے جسمانی ریمانڈ میں تیسری مرتبہ توسیع کردی۔ اس سے پہلے عدالت ملزم کا 21 فروری، یکم مارچ اور 11 مارچ کو جسمانی ریمانڈ دے چکی ہے ۔ واضح رہے کہ آغا سراج درانی کو اسلام آباد سے گرفتار کیا گیا تھا اور ان پر آمدن سے زائد اثاثے بنانے کا الزام ہے۔