طارق روڈ دوپٹہ گلی قتل کیا جانیوالا خواجہ سرا نہیں 4 بچوں کا باپ نکلا

April 15, 2019 12:21 pm0 commentsViews: 7

مقتول شبیر کو تیز دھار آلے کی مدد سے قتل کردیا گیا تھا جس نے خواجہ سرا کا روپ دھار رکھا تھا
پولیس نے بہنوئی کی مدعیت میں قتل کا مقدمہ نامعلوم ملزمان کیخلاف درج کرلیا اور تلاش شروع کردی
کراچی (اسٹاف رپورٹر) فیروز آباد کے علاقے میں تیز دھار آلے سے قتل کیا جانے والا شخص خواجہ سرا نہیں بلکہ شادی شدہ مرد اور چار بچوں کا باپ تھا، پولیس نے بہنوئی کی مدعیت میں قتل کا مقدمہ نامعلوم ملزمان کے خلاف درج کرلیا۔ ہفتہ کی شب طارق روڈ دوپٹہ گلی میں واقع عمارت کی تیسری منزل پر کمرے سے 35 سالہ مبینہ خواجہ سرا شبیر عرف شبانہ عرف عینی خان کی لاش ملی تھی جسے تیز دھار آلے کی مدد سے قتل کر دیا گیا تھا، پولیس نے جائے وقوعہ سے آلہ قتل چھری بھی برآمد کر لی تھی، فیروز آباد پولیس نے قتل کا مقدمہ مقتول کے بہنوئی اللہ جیوایا کی مدعیت میں نامعلوم ملزمان کے خلاف درج کر لیا ہے۔ انسپکٹر سالم رند نے بتایا کہ مقتول خواجہ سرا نہیں بلکہ شادی شدہ مرد اور چار بچوں کا باپ تھا جس نے دوسرے مقاصد اور رقم کمانے کے لیے خواجہ سرا کا روپ اپنایا ہوا تھا۔ مقتول کا اصل نام شبیر تھا جو رحیم یار خان کا رہائشی تھا، اس کے بیوی بچے گلشن اقبال حسین ہزارہ گوٹھ میں کرائے کے مکان میں گزشتہ ڈیڑھ سال سے رہائش پذیر ہیں۔ جس کھولی سے اس کی لاش ملی وہاں وہ اکیلا رہتا تھا، مقتول کے سر چہرے، بازوئوں اور جسم کے مختلف حصوں پر تیز دھار آلے سے وار کے نشانات تھے۔ پولیس نے پوسٹ مارٹم کے بعد مقتول کی لاش اس کے ورثاء کے حوالے کردی جو تدفین کے لیے آبائی علاقے روانہ ہوگئے ہیں۔