بانی متحدہ سے 24گھنٹے تک تفتیش کی جائیگی ٗ بیرسٹر ظریف

June 12, 2019 12:32 pm0 commentsViews: 1

کسی اعلیٰ افسر کی اجازت سے مزید 12گھنٹے بڑھائے جاسکتے ہیں ٗ برٹش پاکستانی ماہر قانون
لندن (مانیٹرنگ ڈیسک) برٹش پاکستانی ماہر قانون بیرسٹر ظریف خان نے کہا ہے کہ ایم کیو ایم کے بانی الطاف حسین کو اپنے وکیل سے بات کرنے کا موقع اور گرفتاری کا سبب فراہم کیا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ ظریف خان نے کہاکہ الطاف حسین کو گرفتار رکھا جائے گا اور پولیس اینڈ کرمنل ایویڈینس کے تحت کوئی الزام عائد کرنے سے قبل پولیس اسٹیشن میں ان سے 24 گھنٹے تک تفتیش کی جائے گی۔ زیادہ تر آفنسز میں پولیس کسی شخص کو زیادہ سے زیادہ 24 گھنٹے بغیر کسی چارج کے حراست میں رکھ سکتی ہے، تاہم حراست میں رکھنے کے دورانیے میں سپرنٹنڈنٹ یا اس سے اوپری رینک کے کسی افسر کی اجازت سے مزید 12 گھنٹے بڑھائے جاسکتے ہیں یا ایک مجسٹریٹ زیادہ سے زیادہ 96 گھنٹے کی حراست کی اجازت دے سکتا ہے۔ اگر کسی کو ٹیررازم ایکٹ کے تحت گرفتار کیا گیا ہے تو پھر بغیر کسی الزام کے 28 دن تک حراست میں رکھا جاسکتا ہے۔