ایک شخص ہونا چاہئے جو میری شوگر چیک کرتا رہے آصف زرداری

June 12, 2019 1:06 pm0 commentsViews: 4

پہلے ریمانڈ پر نہیں دوسرے پر عدالت نے کہا تو اجازت دینگے‘نیب حکام
سابق صدر خود ہی روسٹرم پر آگئے‘ ارے بھائی کتنی بار ریمانڈ لینا ہے میرا؟
آصف علی زرداری کے اس سوال پر کمرہ عدالت میں قہقہے گونج اْٹھے
اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) سابق صدر آصف علی زرداری نے ذاتی معالج اور خدمت گزار کے لیے درخواست دے دی۔ تفصیلات کے مطابق نیب نے سابق صدر آصف علی زرداری کو احتساب عدالت کے جج محمد بشیر کے سامنے پیش کیا۔ دوران سماعت سابق صدر خود ہی روسٹرم پر آگئے اور ایک ذاتی معالج اور خدمت گزار دینے کی درخواست کر دی۔ انہوں نے کہاکہ میں شوگر کا مریض ہوں، مجھے ذاتی معالج اور خدمت گزار چاہئیے۔ایک شخص ہونا چاہئیے جو میری شوگر چیک کرتا رہے۔ نیب نے کہا کہ آصف زرداری کی صحت کا خیال رکھنا ہماری ذمہ داری ہے۔ جس پر آصف زرداری نے کہا کہ میں یہ نہیں کہتا کہ ایک بندہ میرے ساتھ حوالات میں رہے، ایک بندے کی اجازت دی جائے جو نیب کے باہر گاڑی میں موجود ہو۔ ضرورت پڑنے پر میں شوگر چیک کرنے کے لیے اْسے اندر بلا لوں گا۔نیب نے کہا کہ پہلے ریمانڈ پر ہم کسی شخص کی اجازت نہیں دے سکتے البتہ اگر دوسرے ریمانڈ پر اگر عدالت نے کہا تو اجازت دے دیں گے جس پر آصف علی زرداری نے کہا کہ ارے بھائی کتنی بار ریمانڈ لینا ہے میرا؟ آصف زرداری کے اس سوال پر کمرہ عدالت میں قہقہے گونج اْٹھے۔