سندھ نرسز الائنس کاآئی سی یو کی سروسز معطل کرنے کا اعلان

July 10, 2019 11:42 am0 commentsViews: 3

چھٹے روز بھی سندھ بھر ہڑتال‘ مرکزی دھرنا پریس کلب کراچی کے سامنے جاری
نرسز کے ساتھ تحریری معاہدے پر من و عن عمل کیا جائے ،صوبائی حکومت سے مطالبہ
کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ نرسز الائنس کی چھٹے روز بھی سندھ بھرکے اسپتالوں میں ہڑتال اور دھرنے کے ساتھ ساتھ مرکزی دھرنا پریس کلب کراچی کے سامنے جاری رہا۔ سندھ نرسز الائنس کے رہنماؤں نے بدھ سے (آج) سندھ بھرکے اسپتالوں میں ایمرجنسی اورآئی سی یو کی سروسز بھی معطل کرنے کا اعلان کردیا ہے۔ سندھ نرسز الائنس کے رہنماؤں نے حکومت سندھ سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ سندھ کی نرسز سے ہونے والے تحریری معاہدے پر من و عن عمل کیا جائے، معاہدے کے تحت فور ٹیئر اسٹرکچرکے ذریعے پروموشنز اور اپ گریڈیشنز، بیسک پے کے مساوی ہیلتھ پروفیشنل الاؤنس، طلبہ نرسز کا وظیفہ 25000 روپے اور پرنسپلز کو ڈی ڈی او پاورزسمیت 14000نئی اسامیوں پر بھرتیاں کی جائیں۔ مظاہرین کا کہنا تھا کہ ہم گزشتہ چھ روز سے دھرنے پر بیٹھے ہیں لیکن حکومتی اراکین کی جانب سے ہماری دادرسی نہیں کی جارہی ہے۔ دوسری جانب احتجاجی دھرنے میں نرسوں کی شرکت کے باعث اسپتالوں میں طبی سرگرمیاں بری طرح متاثر ہورہی ہیں اور مریضوں کو بھی شدید دشواری کا سامنا ہے۔ قومی ادارہ برائے امراض اطفال نے نرسوں کے احتجاج کے باعث مریض بچوں کا داخلہ بندکردیا ہے جس کے باعث غریب عوام نجی اسپتالوں پر مہنگے داموں علاج کروانے پرمجبورہوچکے ہیں۔ مظاہرین نے ہاتھوں میں مطالبات کے حق میں بینرز اور پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر مختلف نعرے درج تھے۔ نرسنگ ایکشن کمیٹی کے رہنما اعجازکلیری کاکہنا تھاکہ رمضان میں بھی ہم نے مطالبات کے لیے دھرنا دیا ،سیکرٹری صحت اور وزیر بلدیات سے تحریری معاہدہ ہوا انہوں نے 10روز میں مطالبات پر عمل درآمدکرانے کی یقین دہانی کرائی تھی۔