کراچی پریس کلب کے باہر پولیس اور نرسنگ اسٹاف میں جھڑپیں6 گرفتار

July 11, 2019 12:26 pm0 commentsViews: 3

محکمہ صحت سے مذاکرات ناکام ہونے کے بعد دھرنا دے کر بیٹھے نرسنگ اسٹاف نے گورنر ہائوس کی طرف جانے کی کوشش کی تھی
پولیس نے لاٹھی چارج شروع کردیا جس سے کئی افراد زخمی ہوئے، حراست میں لئے جانے والوں میں خواتین بھی شامل ہیں
کراچی(اسٹاف رپورٹر)پولیس کاگورنر ہائوس جانیکی کوشش کرنیوالے نرسنگ اسٹاف پر لاٹھی چارج ‘14 مظاہرین کو حراست میں لے لیا ہے۔پولیس اور مظاہرین میں جھڑپیں بھی ہوئیں۔تفصیلات کے مطابق کئی روز پر دھرنے پر موجود نرسز سے بدھ کوسیکرٹری صحت نے کراچی پریس کلب کے باہر مذاکرات کئے،تاہم مذاکرات ناکام ہوگئے، جس پر نرسز کے صبر کا پیمانہ لبریز ہوا اور انہوں نے گورنر ہائوس کی جانب مارچ شروع کیا۔گورنر ہائوس پہنچنے سے قبل ہی پولیس نے نرسز پر لاٹھی چارج کیا اور 14 مظاہرین کو حراست میں لے لیا ہے، جس کے بعد مظاہرین اور پولیس میں جھڑپ شروع ہوگئی ہے۔اس دوران متعدد افراد زخمی اور بے ہوش بھی ہوئے۔دوسری جانب سیکرٹری صحت سندھ سعید اعوان نے نرسز کے احتجاج کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے کہا کہ نرسز کے مطالبات کی سمری محکمہ فنانس نے اعتراض لگا کرا کر واپس بھیج دی ہیں،دو دن میں نئی سمری دوبارہ محکمہ فنانس کو بھیجیں گے۔واجح رہے کہ کراچی میں نرسز اپنے مطالبات منظور کروانے کیلئے گزشتہ 7 روز سے ہڑتال پر ہیں، نرسز نے مذاکرات ناکام ہونے پر گورنر ہاوس کی جانب پیش قدمی شروع کر دی تاہم پولیس کی بھاری نفری نے بیریئر لگا کر مظاہرین کو پریس کلب کے قریب روک لیا۔وزیراعظم عمران خان بدھ کو سرکاری دورے پر کراچی پہنچے ،نرسز گورنر ہائوس کے باہر احتجاج ریکارڈ کروانا چاہتی ہیں تاہم پولیس نے انہیں روکتے ہوئے گرفتاریاں شروع کر دیں۔ اس دوران نرسز کی طرف سے بھی خوب مزاحمت دیکھنے میں آئی اور وہ حکام کے خلاف خوب نعرے بازی کرتی رہیں۔