ٹرانسپورٹرز نے کرائے بڑھا دیئے، مسافروں اور کنڈیکٹرز میں جھگڑے

July 16, 2019 12:00 pm0 commentsViews: 10

حکومتی رٹ غائب، وزیر ٹرانسپورٹ اور ٹریفک پولیس افسران خاموش تماشائی بن گئے
کم سے کم کرایہ 10 روپے تھا جو ڈبل کردیا گیا، اب 20 روپے وصول کئے جارہے ہیں
کراچی (اسٹاف رپورٹر) سی این جی کی قیمت میں حالیہ اضافے کا خمیازہ شہری بھگتنے لگے، پبلک ٹرانسپورٹرز نے من مانے کرایے وصول کرنا شروع کر دیے۔ بس، منی بس اور کوچ کے ڈرائیور اور کنڈیکٹرز اضافی کرایے وصول کر رہے ہیں، صورتحال کی وجہ سے مسافروں اور کنڈیکٹرز کے درمیان بحث، تلخ کلامی اور جھگڑے بڑھ گئے۔ صورتحال کے دوران صوبائی حکومت کی جانب سے واضح احکام کے باوجود حکومتی رٹ دکھائی نہیں دے رہی، وزیر ٹرانسپورٹ اور ٹریفک پولیس افسران خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق سی این جی کی فی کلو قیمت میں 19 روپے اضافے کا تمام تر بوجھ بسوں، منی بسوں اور کوچز کے ذریعے سفر کرنے والے شہریوں کی جیبوں پر پڑ رہا ہے، بس مالکان کی ہدایت پر ڈرائیور اور کنڈیکٹرز نے کرایوں میں من مانا اضافہ کر دیا۔ بسوں، منی بسوں اور کوچز میں دگنے کرایے وصول کیے جارہے ہیں، اضافی کرایوں کی وجہ سے کنڈیکٹروں اور مسافروں میں تلخ کلامی کے واقعات بڑھ گئے۔ وزیر ٹرانسپورٹ اور ٹریفک پولیس کے افسران خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں، پبلک ٹرانسپورٹ مالکان نے کسی حکومتی نوٹیفکیشن کے بغیر من مانے کرایے وصول کرنا شروع کر دیے ہیں، اس سے قبل بس کا فی اسٹاپ کم سے کم کرایہ 10 روپے تھا جوکہ ڈبل کی صورت 20 روپے وصول کیا جارہا ہے۔