تین ہزار ڈاکٹروں کا معاشی قتل عام منظور نہیں ہے

August 19, 2019 12:20 pm0 commentsViews: 5

سعودی عرب اور دبئی سے پاکستانی ڈاکٹروں کو فارغ کرنے کا نوٹس لیا جائے
کراچی پریس کلب میں آرتھو پیڈک ایسوسی ایشن کے رہنمائوں کی پریس کانفرنس
کراچی (اسٹاف رپورٹر)پاکستان آرتھو پیڈک ایسوسی ایشن نے سعودی کمیشن فار ہیلتھ اسپیشلٹیز اور دبئی ہیلتھ اتھارٹی کی جانب سے ایم ڈی اور ایم ایس کی ڈگری کے حامل پاکستانی ڈاکٹروں کو نوکریوں سے فارغ کیے جانے پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے حکومت پاکستان ،پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل ،پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن اور دیگر طبی ایسوسی ایشنز سے مطالبہ کیا ہے کہ تین ہزار ڈاکٹروں کے معاشی قتل عام کے خلاف سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کی حکومت سے فوری طور پر بات چیت کی جائے اور مسئلے کے حل کیلئے سنجیدہ کاوشیں کی جائیں۔ہفتہ کو کراچی پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ایسوسی ایشن کے صدر پروفیسر محمد عارف ،پروفیسر خلیل احمد گل ،پروفیسر نعیم الحق پروفیسر مصطفی قائم خانی ،پروفیسر سید شاہد نور ،عباس حسین،اطہر صدیقی اور دیگر نے کہا کہ سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات میں ایم ڈی اور ایم ایس کی ڈگری کے حامل اسپیشلائزڈ ڈاکٹر گزشتہ 15سال سے اپنی خدمات انجام دے رہے تھے۔اس عرصہ کے دوران دونوں ملکوں کی حکومتوں کو ان کے ساتھ کوئی مسئلہ نہیں ہوا لیکن اب اچانک ہی سعودی کمیشن فار ہیلتھ اسپیشلٹیز اور اور دبئی ہیلتھ اتھارٹی کی جانب سے ایم ڈی اور ایم ایس کی ڈگری کے حامل3ہزار سے زائد پاکستانی ڈاکٹروں کو نوکریوں سے فارغ کردیا گیا ہے۔سعودی اور یواے ای کی حکومتوں کا کہنا ہے کہ یہ ڈاکٹرز کوالیفائیڈ نہیں ہیں ،جو ان کی تذلیل کے مترادف ہے۔