پسند کی شادی کرنے والے جوڑے کے اہل خانہ لڑ پڑے عدالت میدان جنگ بن گئی

August 23, 2019 12:31 pm0 commentsViews: 4

دو فریق آپس میں گتھم گتھا ہوگئے، ایک دوسرے پر لاتوں اور گھونسوں کی بارش کردی
تحفظ فراہم کرنے سے متعلق درخواست کی سماعت کے موقع پر شبانہ اور شہباز عدالت میں پیش ہوئے تھے
کراچی (اسٹاف رپورٹر) سندھ ہائی کورٹ کا احاطہ میدان جنگ بن گیا، پسند کی شادی کرنے والی لڑکی اور لڑکے کے اہل خانہ احاطہ عدالت میں ایک دوسرے پر گتھم گتھا مرد اور عورتیں آپس میں لڑتی رہیں۔ عدالتی اسٹاف نے دونوں فریقین کو احاطہ عدالت سے باہر کر دیا۔ جمعرات کو سندھ ہائی کورٹ میں پسند کی شادی کرنے والے جوڑے کی جانب سے تحفظ فراہم کرنے سے متعلق درخواست کی سماعت ہوئی اس موقع پر لڑکی شبانہ اور لڑکا شہباز عدالت میں پیش ہوئے، عدالت نے درخواست گزاروں کے وکیل سے استفسار کیا کہ لڑکی کی عمر کیا ہے، وکیل درخواست گزار نے بتایا کہ لڑکی کی عمر 18 سال ہے۔ عدالت نے تفتیشی افسر کو لڑکی کا بیان ریکارڈ کرنے کا حکم دیا اور ہدایت کی کہ فوری لڑکی کا بیان ریکارڈ کرکے عدالت میں پیش کیا جائے۔ دوران سماعت لڑکی شبانہ عدالت کو مطمئن کرنے میں ناکام رہی، عدالت نے پسند کی شادی کرنے والی لڑکی شبانہ کو دارالامان بھیج دیا۔ عدالت نے پولیس حکام کو لڑکی کا مکمل میڈیکل چیک اپ کرکے رپورٹ جمع کرانے کا حکم دیا اور پولیس حکام کو لڑکی کے شوہر شہباز کو تحفظ دینے کا حکم دیا، عدالت نے کیس کی سماعت 29 اگست تک ملتوی کردی۔