ملک بھر میں ٗبے نامی جائیدادوں کیخلاف بڑے کریک ڈائون کا فیصلہ

August 24, 2019 11:47 am0 commentsViews: 4

ڈپٹی کمشنروں اور ڈیولپمنٹ اتھارٹیز کے سربراہوں کو بے نامی جائیدادوں کی نشاندہی کرنے کی ذمہ داری سونپ دی گئی
تمام افسر 30 ستمبر تک اپنی رپورٹ چیئرمین ایف بی آر کو بھجوانے کے پابند ہونگے ‘وزیراعظم آفس سے جاری مراسلہ
اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم عمران خان نے بے نامی جائیدادوں کیخلاف کریک ڈاؤن کے حوالے سے بڑا فیصلہ کیا ہے ، تمام افسر 30 ستمبر تک اپنی رپورٹ چیئرمین ایف بی آر کو بھجوانے کے پابند ہونگے ، وزیراعظم کے حکم پر ملک بھر کے تمام ڈپٹی کمشنروں اور ڈویلپمنٹ اتھارٹیز کے سربراہوں کو بے نامی جائیدادوں کی نشاندہی کرنے کی ذمہ داری سونپ دی گئی۔ اس سلسلہ میں جمعہ کو وزیراعظم آفس کی جانب سے تمام صوبائی چیف سیکرٹریز کو مراسلے بھیج دیئے گئے۔ وزیراعظم آفس سے جاری مراسلہ کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے ہدایت کی کہ تمام ڈپٹی کمشنر ایک ماہ میں اپنے متعلقہ علاقوں میں واقع بے نامی اور مشکوک جائیدادوں کی نشاندہی کرکے رپورٹ پیش کریں۔ رپورٹ میں نشاندہی نہ کی جانیوالی بے نامی جائیداد کا بعد میں پتا چلنے پر متعلقہ ڈپٹی کمشنر/ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے سربراہ کو ذمہ دار ٹھہرایا جائے گا اور متعلقہ افسر کیخلاف بے نامی قانون کے تحت کارروائی عمل میں لائی جائے گی، تمام افسر 30 ستمبر تک اپنی رپورٹ چیئرمین ایف بی آر کو بھجوانے کے پابند ہیں، رپورٹ کی کاپی وزیراعظم آفس کو بھی بھیجی جائے گی۔ مراسلہ میں بتایا گیا کہ بے نامی جائیدادوں کے حوالے سے 20 اگست کو ہونیوالے اہم اجلاس میں وزیراعظم نے اس بات پر زور دیا کہ بے نامی جائیدادوں کی نشاندہی کیلئے فوری اقدامات کی ضرورت ہے اور اس ضمن میں صوبائی حکومتیں متحرک کردار ادا کریں۔دنیا نیوز کے مطابق وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا ڈپٹی کمشنرز،سربراہان ڈویلپمنٹ اتھارٹیزبے نامی جائیدادوں کی نشاندہی کریں، ناکامی کے ذمہ دارمتعلقہ حکام ہونگے۔