کراچی :مکھیوں و مچھروں کی بہتات، شہری پریشان

August 24, 2019 1:04 pm0 commentsViews: 24

کراچی: کراچی میں بارشوں کے بعد حشرات الارض میں بے پناہ اضافہ ہوگیا جس کی وجہ سے موذی امراض پھوٹنے کا خدشہ پیدا ہوگیا جب کہ گلیوں،محلوں ، گھروں ،ریسٹورنٹ،ہوٹلزمیںمچھروں اورمکھیوں کی افزائش میں اضافہ ہوگیا۔ کراچی میں حالیہ بارشوں کے بعد شہر میں گندگی و غلاظت کی وجہ سے شہر میں مچھروں اور مکھیوں کی افزائش میں بے پنا اضافہ ہوگیا،بارشوں کے بعد ماضی میں حکمت عملی مرتب کی جاتی تھی کہ گندگی و غلاظت کو صاف کیا جائے، ان مقامات پر چو نے کا چھڑکاؤ کیا جاتا تھاتاکہ حشرات الارض کی افزائش نہ ہو اور جر اثیم کش اسپر ے کیا جاتا تھا لیکن اس بار ایسا کچھ نہیں ہوا۔

بارشوں کے بعد گندگی و غلاظت کو پڑے10دن سے زائد ہوگئے، صاف نہیں کی گئی جس کی وجہ سے مچھروں اور مکھیوں اس قدراضافہ ہوگیا ہے کہ گھروں ،محلوں ، دکانیں ، ہوٹلز غرض تمام ہی جگہ خاص طور پر مکھیوں نے شہریوں کی زندگی اجیرن کرکے رکھ دی ہے جس کی وجہ سے موذی امراض پھوٹنے کا خد شہ ہے۔ شہر میں مختلف بیما ریاں پھو ٹ پڑی ہے ،بلدیہ عظمیٰ کر اچی اور سندھ حکومت کی جانب سے جراثیم کش اسپرے کے حوالے سے اب تک کو ئی بڑے پیما نے پر کام شروع نہیں کیاجا سکا۔

بلد یہ عظمیٰ کراچی کی جانب سے جراثیم کش اسپرے کا کام شروع کیا گیا جس میں پا نچ گا ڑیاں ایک ضلع میں روانہ کی جا رہی ہیں جو کچھ دیر اسپرے کر کے وہا ں سے روانہ ہو جا تے ہیں نہ بڑے پیما نے پر ادویات ہیں اور نہ ہی ایندھن وافر مقدار میں موجود ہے۔ بلد یہ عظمیٰ کراچی کے افسران کا کہنا ہے کہ مالی بحران کی وجہ سے بڑے پیمانے پر جراثیم کش اسپر ے مہم شروع نہیں کی جا سکی۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ مکھیوں نے زندگی اجیرن کر دی، ہر چیز پر ٹیکس دینے کے باوجود کوئی سہولت نہیں ہے، ہائی کورٹ ٹیکس کی رقم کا درست استعمال نہ ہونے کا نوٹس لے، حکومت کی جانب سے بھی اسپرے کے لیے کو ئی حکمت عملی مرتب نہیں کی گئی اور سندھ حکومت صرف بیانات کی حد تک کامو ں میں مصروف ہے۔