مغوی بیٹی کو عدالت میں دیکھ کر باپ دل کا دورہ پڑنے سے انتقال کرگیا

September 7, 2019 12:55 pm0 commentsViews: 6

عدالت میں ایمبولینس تھی نہ اہلخانہ کے پاس لاش واپس لے جانے کے پیسے تھے
عدالت کے باہر لوگوں نے چندہ جمع کیا اور محمد جمعہ کی لاش کو پک اپ میں رکھ کر سجاول بھیجا
سجاول میں پولیس نے تعاون نہ کیا سندھ ہائیکورٹ انصاف کی فراہمی کیلئے آیا تھا‘اہلخانہ
متوفی جمعہ ایک سال سے بیٹی کو مغویوں سے چھڑانے کیلئے مارا مارا پھر رہا تھا‘ اغواکار بھی قتل ہوگیا
کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ ہائی کورٹ میں اغوا بیٹی کو دیکھ کر والد دل کا دورہ پڑنے سے انتقال کرگیا۔تفصیلات کے مطابق سندھ ہائی کورٹ میں اپنی اغوا ہونی والی بیٹی کو دیکھ کر والد دل کا دورہ پڑنے سے دار فانی سے کوچ کرگیا، عدالت میں ایمبولینس تھی نہ اہلخانہ کے پاس لاش واپس لے جانے کے پیسے تھے۔محمد جمعہ ایک سال سے بیٹی کو مغویوں سے چھڑانے کے لیے مارا مارا پھر رہا تھا۔عدالت کے باہر لوگوں نے متاثرہ خاندان کے لیے چندہ جمع کیا اور محمد جمعہ کی لاش کو پک اپ میں رکھ کر آبائی شہر سجاول لے جائے گیا۔اہلخانہ کا کہنا ہے کہ سجاول میں پولیس نے تعاون نہ کیا اس لیے وہ سندھ ہائیکورٹ انصاف کی فراہمی کے لیے آیا تھا۔رپورٹ کے مطابق محمد جمعہ کی بیٹی کو فاروق نامی شخص نے اغوا کیا تھا، اغوا کار بھی جھگڑے میں قتل ہوگیا تھا۔واضح رہے کہ سندھ پولیس کی جانب سے عدم تعاون پر اندرون سندھ کے متعدد شہری عدالتوں میں انصاف کی فراہمی کے لیے مارے مارے پھرتے ہیں۔