کشمیر آتش فشاں بن گیا کسی وقت بھی پھٹ سکتا ہے بھارتی کانگریس

September 7, 2019 1:11 pm0 commentsViews: 7

لوگوں کو جبر سے دبایا نہیں جاسکتا، جو لوگ مودی حکومت کے کشمیر کے فیصلے پر ساتھ کھڑے ہیں وہ ہوش کے ناخن لیں
کشمیر کی صحیح صورتحال بتانے والے کو غدار قرار دے دیا جاتا ہے، منیش تیواری کی مودی حکومت پر کڑی تنقید
نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی اپوزیشن جماعت کانگریس کے ترجمان منیش تیواری نے مقبوضہ کشمیر کی کشیدہ صورتحال پر مودی سرکار کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ مودی حکومت کے مظالم کے باعث کشمیر آتش فشاں بن چکا ہے جو کسی بھی وقت پھٹ سکتا ہے۔ بھارتی میڈیا کے مطابق کانگریس کے ترجمان منیش تیواری نے پریس کانفرنس میں مودی حکومت کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہاکہ کشمیر میں صورتحال انتہائی ابتر ہو گئی ہے اور وہاں حکومتی دعوئوں کے برعکس کچھ بھی نارمل نہیں ہے، لوگوں کے جذبات کا ایک آتش فشاں ہے جو کسی بھی وقت پھٹ سکتا ہے۔ تیواری نے مزید کہاکہ اگر کوئی مودی حکومت کی غلط بیانی کا پردہ چاک کرتے ہوئے کشمیر کی صحیح صورتحال بتاتا ہے تو اسے غدار قرار دے دیا جاتا ہے، اگر آرٹیکل 370 کی منسوخی کشمیریوں کے حق میں ہوتی تو وہاں کبھی بھی کرفیو اور پابندیوں کی ضرورت نہ ہوتی اور نہ وہاں کی سیاسی و مذہبی قیادت کو گرفتار کرنا پڑتا۔ ترجمان کانگریس نے مودی سرکار کی مذہبی جنونیت اور نفرت آمیز پالیسی پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہاکہ لوگوں کو جبر سے دبایا نہیں جاسکتا، مودی حکومت کے ساتھ ساتھ ان لوگوں کو بھی ہوش کے ناخن لینے چاہئیں جو مودی سرکار کے آرٹیکل 370 اور 35-A کی منسوخی کے فیصلے میں ان کے ساتھ کھڑے ہیں۔ واضح رہے کہ مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کے خاتمے اور مسلسل کرفیو نافذ رکھنے پر مودی سرکار کو اقوام متحدہ، ایمنسٹی انٹرنیشنل اور عالمی قوتوں سمیت اب ملک کے اندر بھی شدید تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے لیکن مودی تاحال اپنی ہٹ دھرمی پر قائم ہیں۔