دودھ مافیا شہریوں سے روزانہ 6 کروڑ 40 لاکھ روپے لوٹے جانے لگے

September 17, 2019 12:15 pm0 commentsViews: 5

کراچی میں دودھ کی سرکاری قیمت 94 روپے جبکہ اصل قیمت 110 روپے کے حساب سے روزانہ 40 لاکھ لیٹر فروخت ہوتا ہے
چیف ایگزیکٹیو سمیت شہر قائد کی انتظامیہ کہاں سوئی پڑی ہے اور کون کون اس گنگا میں نہا رہا ہے تحقیقات کی جائیں
کراچی (نیوز ڈیسک) کراچی میں دودھ کی سرکاری قیمت 94 روپے جبکہ اصل قیمت 110 روپے ہے، شہر میں تقریباً 40 لاکھ لیٹر دودھ فروخت ہوتا ہے، 16 روپے زائد وصولی سے حیران کن طور پر تقریباً 6 کروڑ 40 لاکھ روپے یومیہ لوٹے جارہے ہیں۔ کمشنر کراچی اور ڈپٹی کمشنرز کا کہنا ہے کہ شہر میں دودھ کی سرکاری قیمت 94 روپے جبکہ اصل قیمت 110 روپے ہے۔ دودھ والے اپنی من مانی کر رہے ہیں، زمینی حقائق یہ ہیں کہ دودھ 94 روپے نہیں بلکہ 110 روپے بک رہا ہے۔ دکان داروں کا کہنا ہے کہ ڈیری فارمرز نے دودھ کی قیمت 10 روپے بڑھا دی ہے لہٰذا ان کے پاس بھی قیمت بڑھانے کے سوا کوئی چارہ نہیں ہے۔ دوسری جانب ڈیری فارمرز کا کہنا ہے کہ کمشنر کراچی یا متعلقہ صوبائی وزارت قیمت کے تعین کے لیے اجلاس نہیں بلا رہے۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ جب دودھ کی اس سرکاری قیمت 94 روپے تھی اور شہر میں 100 روپے لیٹر دودھ بیچا جارہا تھا تو یومیہ تقریباً ڈھائی کروڑ اور سالانہ تقریباً 8 ارب روپے شہریوں کی جیب سے لٹنے رہنے پر صوبے کے چیف ایگزیکٹو سمیت کراچی انتظامیہ کہاں سوئی پڑی تھی اور کون کون اس گنگا میں نہاتا رہا؟