سندھ میں دہرے ٹیکس،انڈور کھیلوں کی صنعت کو خطرہ

October 11, 2019 11:41 am0 commentsViews: 3

انڈور کھیلوں کی صنعت ابھی ابتدائی مرحلے میں ہے اس میں روزگار کے بڑے مواقع بھی ہیں
حکومت سندھ کے فنانس ایکٹ 2019 کے نفاذ کے بعد 13 فیصد کا سیلز ٹیکس نافذ کردیا گیا
کراچی (نیوز ڈیسک) سندھ میں دہرے ٹیکسوں کی وجہ سے تفریحی، انڈور کھیلوں کی صنعت کو زبردست دھچکا پہنچا ہے اور خدشہ ہے کہ انڈسٹری سے وابستہ ہزاروں افراد کا روزگار خطرے میں پڑ جائے گا، انڈور کھیلوں کی صنعت ابھی ابتدائی مرحلے میں ہے اور اس میں روزگار کے بڑے مواقع ہیں تاہم سندھ حکومت کے فنانس ایکٹ 2019ء کے نفاذ کے بعد 13 فیصد کا سیلز ٹیکس نافذ کر دیا گیا ہے جو شق 51B کے تحت ہے جبکہ ایکسائز ڈپارٹمنٹ نے پہلے ہی 25فیصد انٹرٹینمنٹ ڈیوٹی ٹکٹوں اور جھولوں پر عائد کررکھی ہے جو تفریحی پارکوں میں لگائے گئے ہیں۔ دہرے ٹیکس صنعت کے لیے حوصلہ شکنی کا باعث بن رہے ہیں اور نئے سرمایہ کار اپنی سرمایہ کاری کا رخ دیگر علاقوں اور خطوں کی طرف کر سکتے ہیں جہاں اس صنعت کو مراعات دی جارہی ہیں۔ حکومت سندھ کو چاہیے کہ وہ دہرے ٹیکسوں میں پائے جانے والی اس بے قاعدگی کو دور کرے اور مختصر مدت کے قوائد کو دیکھنے کے بجائے طویل المدت فوائد کو مدنظر رکھنا چاہیے۔