بھارت میں علامہ اقبال کی نظم پڑھانے پر مسلم ہیڈ ماسٹر معطل اسکول بھی بند

October 17, 2019 12:38 pm0 commentsViews: 1

’’لب پہ آتی ہے دعا بن کر تمنا میری‘‘ سوا صدی قبل لکھی گئی جسے پورے ہندوستان میں پڑھایا جاتا ہے
ہندو انتہا پسندوں کی شکایت پر انتظامیہ نے محکمہ تعلیم کو فرقان احمد کے خلاف تحقیقات کا حکم دے دیا
بھارتی اسکولوں میں علامہ اقبال کی ہی ایک صدی قبل لکھی گئی نظم سارے جہاں سے اچھا ہندوستان ہمارا بڑے شوق سے پڑھائی جاتی ہے
نئی دہلی( مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت کی سب سے بڑی ریاست اتر پردیش کے ضلع پیلی بھیت کے ایک سرکاری اسکول ہیڈ ماسٹر کو شاعر مشرق علامہ اقبال کی شہرہ آفاق نظم لب پہ آتی ہے دعا بن کر تمنا میری پڑھانے پر معطل کردیا گیا۔ بھارتی اخبار انڈین ایکسپریس کے مطابق مسلم اسکول ہیڈ ماسٹر45 سالہ فرقان احمد کو وشواہندو پریشد کی شکایت پر معطل کیا گیا۔ ڈاکٹر علامہ اقبال نے لب پہ آتی ہے دعا بن کر تمنا میری نظم سواصدی قبل1905 ء میں لکھی۔ علامہ اقبال کی یہ نظم ہندوستان میں بھی مسلمان طلبہ دوران تعلیم اسکول و مدارس میں پڑھتے ہیں۔ ہندو انتہا پسند ارکان کی شکایت کے بعد ضلعی انتظامیہ نے محکمہ تعلیم کے اعلیٰ افسر کو معاملے کی تفتیش کا حکم دیا تھا۔ محکمہ تعلیم کی تفتیشی ٹیم نے اسکول کے ہیڈ ماسٹر کو طلبہ کو علامہ اقبال کی دعا پڑھنے پر آمادہ کرنے کے الزام میں معطل کردیا۔ حیران کن بات یہ ہے کہ بھارتی اسکولوں میں علامہ اقبال کی ایک صدی قبل لکھی گئی نظم سارے جہاں سے اچھا ہندوستان ہمارا بڑے شوق سے پڑھی جاتی ہے۔