نیب کا انورمجید کیخلاف منی لانڈرنگ اور بدعنوانی کا ریفرنس دائر کرنے کا فیصلہ

October 17, 2019 12:48 pm0 commentsViews: 3

انور مجید نے دیگر ملزمان کے ساتھ مل کر قومی خزانے کو 34 کروڑ کا نقصان پہنچایا، نیب ایگزیکٹو بورڈ
سیدعارف خان اور سعادت انور کیخلاف ریفرنس دائرکرنے کی منظوری‘ چیئرمین کی زیر صدارت اجلاس
اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)نیب کے ایگزیکٹو بورڈ نے اومنی گروپ کے مالک انور مجید کے خلاف منی لانڈرنگ اور بدعنوانی کا ریفرنس دائر کرنے کی منظوری دے دی ہے۔میڈیا ذرائعکے مطابق چیئرمین نیب جسٹس(ر) جاوید اقبال کی زیر صدارت ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس ہوا، جس میں فیصلہ کیا گیا کہ اومنی گروپ کے سربراہ انور مجید کے خلاف منی لانڈرنگ اور بدعنوانی کا ریفرنس دائر کیا جائے گا، ملزم نے دیگر ملزمان کے ساتھ مل کر قومی خزانے کو 34 کروڑ کا نقصان پہنچایا۔نیب نے سیدعارف خان اور سابق چیئرمین بلوچستان ڈویلپمنٹ اتھارٹی سعادت انور کے خلاف بھی ریفرنس دائرکرنے کی منظوری دی جب کہ نثار احمد افضل، صغیراحمد اور دیگر کے خلاف تحقیقات کی منظوری دی گئی۔اجلاس میں انکوائریوں کی بھی منظوری دی گئی، جس میں محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کے افسران واہلکاروں، سندھ بلڈنگ کنٹرول ،کراچی میٹروپولیٹن کارپوریشن، بلوچستان ڈویلپمنٹ اتھارٹی کوئٹہ کی انتظامیہ و دیگر کے خلاف انکوائریز شامل ہیں۔اجلاس میں چیئرمین اوگرا، پنجاب انرجی ہولڈنگ کمپنی ، فضل امین، سراج الدین، عبدالولی خان یونیورسٹی مردان کے افسران و اہلکاروں دیگر کے خلاف عدم شواہد پر انکوائریز بند کرنے کی منظور دی گئی۔اس موقع پر چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال کا کہنا تھا کہ نیب نے گزشتہ 23ماہ میں 71ارب روپے بدعنوان عناصر سے برآمد کرکے قومی خزانے میں جمع کرائے، نیب کا ایمان کرپشن فری پاکستان ہے، ملک سے بدعنوانی کا خاتمہ نیب کی اولین ترجیح ہے۔