آصف زرداری کیخلاف نیب کا گھیرا مزید تنگ‘ ٹرائل کیلئے خصوصی ٹیمیں تشکیل

October 21, 2019 12:13 pm0 commentsViews: 2

پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین کیخلاف پراسیکیوشن ٹیمیں 6جعلی اکاؤنٹس ریفرنسز کے ٹرائل کے سلسلے میں بنائی گئی ہیں
ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل مظفر عباسی 6 رکنی پراسیکوشن ٹیم کے سربراہ جبکہ مدثر نقوی کو پراسیکیوٹر مقرر کیا گیا ہے‘نیب ذرائع
اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)سابق صدر آصف زرداری کیخلاف نیب کا گھیرا مزید تنگ ،نیب نے جعلی اکاؤنٹ کیس میں آصف زرداری کیخلاف ٹرائل کیلئے خصوصی ٹیم تشکیل دیدی ہیں ۔تفصیلات کے مطابق نیب نے خصوصی ٹیمیں تشکیل دی ہیں جو سابق صدر اور پیپلز پارٹی کے شریکچیئرمین کے خلاف کیسز کو دیکھیں گی، یہ پراسیکوشن ٹیمیں 6 جعلی اکاؤنٹس ریفرنسز کے ٹرائل کے سلسلے میں بنائی گئی ہیں۔نیب کے مطابق ڈپٹی پراسیکوٹر جنرل مظفر عباسی 6 رکنی پراسیکوشن ٹیم کے سربراہ مقرر کیے گئے ہیں، میگا منی لانڈرنگ اور پارک لین ریفرنسز میں مدثر نقوی کو پراسیکوٹر مقرر کیا گیا ہے۔غیر قانونی الاٹمنٹ کے ریفرنس میں سہیل عارف، پنک ریذیڈنسی ریفرنس میں وسیم جاوید، ہریش کمپنی ریفرنس میں عرفان احمد بولہ، جب کہ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی ریفرنس میں مرزا عثمان مقصود کو پراسیکوٹر مقرر کیا گیا۔نیب نے مظفر عباسی کو روزانہ کی بنیاد پر ہیڈ کوارٹر کو پیش رفت سے آگاہ رکھنے کی ہدایت کر دی ہے۔یاد رہے کہ جعلی اکاؤنٹس کیس میں آصف زرداری اور فریال تالپور کے جوڈیشل ریمانڈ میں 22 اکتوبر تک توسیع کی گئی تھی، 4 اکتوبر کو احتساب عدالت میں جعلی بینک اکاؤنٹس اور منی لانڈرنگ کیس پر سماعت کے دوران دونوں پر فرد جرم عائد نہیں ہو سکی تھی۔کیس میں ملوث تمام ملزمان کو مقدمے کی نقول فراہم نہ کرنے پر عدالت نے برہمی کا بھی اظہار کیا، وعدہ معاف گواہ بننے والے بینک ملازمین سے متعلق استفسار پر نیب پراسیکوٹر مظفر عباسی نے کہا کہ ملازمین کی درخواست پر کارروائی جاری ہے، جس پر عدالت نے سرزنش کی کہ یہ کارروائی کب تک جاری رہے گی۔