صدر اور طارق روڈ پر نو انکروچمنٹ زون بنانے کی تیاری

October 23, 2019 1:57 pm0 commentsViews: 9

ٹھیلے، پتھارے اور دکانوں کے باہر سامان لگانے کی اجازت نہیں دی جائے گی، طارق دھاریجو
کراچی(اسٹا ف رپورٹر)کراچی کے مرکزی علاقوں میں تجاوزات کے خاتمے کے بعد صدر اور طارق روڈ پر نو انکروچمنٹ زون بنانے کی تیاری کی جارہی ہے۔اس ضمن میںاینٹی انکروچمنٹ فورس سندھ کے نئے ڈائریکٹر طارق دھاریجو نے بتایا کہ سرجانی ٹائون، منگھوپیر، ملیر اور دیگر علاقوں میں سرکاری اور غیر سرکاری املاک پر قبضے کرنے والوں کے خلاف آپریشن تیزی سے جاری ہے اور اس سلسلے میں مقامی پولیس کا بھی انتہائی تعاون حاصل ہے۔انہوں نے بتایاکہ کراچی کے ضلع جنوبی اور شرقی کے ڈپٹی کمشنرز کی منصوبہ بندی سے صدر میں ایمپریس مارکیٹ کے اطراف اور پریڈی اسٹریٹ جبکہ ضلع شرقی میں طارق روڈ کو مکمل طور پر نو انکروچمنٹ زون بنایا جا رہا ہے۔انہوں نے کہاکہ اس کے لیے کسی خاص آپریشن کی ضرورت نہیں تاہم ان علاقوں میں معمول کے مطابق لگنے والے ٹھیلوں، پتھاروں اور دکانوں کے باہر سامان لگانے کی قطعی اجازت نہیں دی جائے گی جس کے لیے اینٹی انکروچمنٹ فورس کی نفری تعینات کی جائے گی۔انہوں نے کہاکہ ان علاقوں کی خوبصورتی بحال اور برقرار رکھنے کے لیے ضلعی انتظامیہ بھی اقدامات کرے گی۔ڈائریکٹر اینٹی انکروچمنٹ سندھ طارق دھاریجو نے کراچی میں تجاوزات کے خلاف آپریشن اور قبضہ ختم کرانے میں ایڈیشنل آئی جی کراچی غلام نبی میمن کی بہترین حکمت عملی کی تعریف کی۔انہوں نے کہاکہ ایڈیشنل آئی جی کراچی کے ویژن کے مطابق ایماندار ایس ایچ او ز تعینات کرنے کے سلسلے سے کراچی کا فائدہ ہو رہا ہے۔اینٹی انکروچمنٹ فورس کے ذرائع کے مطابق سرجانی ٹائون اور منگھوپیر میں جب سے ماڈل پولیس افسران ایس ایچ اوز تعینات کیے گئے ہیں زمینوں پر قبضے 90 فیصد تک ختم ہوگئے ہیں اور یہ افسران قبضے روکنے کے لیے انتہائی کارگر ثابت ہو رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ان کی کوشش ہے کہ ابراہیم حیدری کے علاقوں میں سرکاری اور نجی املاک پر قبضہ ختم کرانے اور بحال رکھنے کے لیے ماڈل ایس ایچ اوزکو تعینات کیا جائے۔