لیاری جنرل اسپتال میں طبی آلات خراب بیشتر یونٹ بند کردیئے گئے

November 28, 2019 1:42 pm0 commentsViews: 5

سی ٹی اسکین، انڈو اسکوپی، انیستھیسیا مشین، امراض چشم کے امراض کی جانچ کرنے والی مشین ناکارہ پڑی ہے
اسپتال کا سرجیکل آئی سی یو بند ہے، 2 سال سے اکائونٹنٹ کی اسامی بھی خالی پڑی ہے
طبی سہولیات دینے میں غیر سنجیدگی کا عملی مظاہرہ، خمیازہ غریب عوام بھگت رہے ہیں
کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) صوبائی محکمہ صحت کے ماتحت چلنے والے سندھ گورنمنٹ لیاری اسپتال کے بیشتر یونٹ بند کر دیے گئے جبکہ متعدد یونٹس کی مشینیں بھی خراب پڑی ہیں، اسپتال میں ڈاکٹروں، پیرامیڈیکل عملے اور نرسوں کی مجموعی طور 487 اسامیاں خالی پڑی ہیں جبکہ اسپتال میں 2 سال سے اکائونٹنٹ کی بھی تعیناتی نہیں کرائی جاسکی، اسپتال کی سی ٹی اسکین مشین ایک ماہ سے خراب، انڈواسکوپی، ڈینیستھیپا مشین، امراض چشم میں مریضوں کی بینائی چیک کرنے والی مشین بھی خراب پڑی ہے۔ اسپتال کا سرجیکل آئی سی یو بند، 8 سال گزرنے کے بعد بھی اسپتال میں تھیلسمیا سینٹر کو فعال نہیں کیا جاسکا، کروڑوں روپے کی مشینری بھی بند پڑی ہیں۔ ایک سال سے غریب مریضوں کے لیے زکوٰۃ فنڈ بھی بند کر دی گئی حکومت سندھ اور محکمہ صحت کی عدم توجہی کی وجہ سے لیاری اسپتال اپنی افادیت کھوتا اور اس اسپتال کو مزید بہتر بنانے اور لیاری کے عوام کو مزید طبی سہولتوں کی فراہمی کو سنجیدہ لینے کے بجائے انتہائی غیر سنجیدگی کا عملی مظاہرہ کیا گیا جس کے نتیجے میں اسپتال کے بیشتر یونٹس بند کر دیے گئے اور اس غفلت کا خمیازہ آج لیاری کے غریب عوام کو بھگتنا پڑ رہا ہے۔