نوجوانوں کا اسمارٹ فونز پر انحصار، نشے یا لت لگنے کا نام دیا جانے لگا

December 2, 2019 1:22 pm0 commentsViews: 6

کراچی (نیوز ڈیسک) نوجوانوں کی تقریباً ایک چوتھائی تعداد اسمارٹ فونز پر اس قدر انحصار کرتی ہے کہ اسے نشے یا لت لگنے کا نام دیا جاسکتا ہے۔ ایک نئی تحقیق کے بعد نفسیاتی ماہرین اس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ اسمارٹ فونز کی لت پڑنے کے بعد نوجوانوں میںکم خوابی، ڈپریشن اور کئی دوسری طرح کے نفسیاتی مسائل پیدا ہو رہے ہیں، لندن کے کنگز کالج کے تحت ہونے والی اس تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ نشے جیسے طرز عمل کا مطلب یہ ہے کہ اگر ان لوگوں کو اسمارٹ فون استعمال کرنے سے روکا جائے تو وہ پریشان اور خوفزدہ ہو جاتے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق اسمارٹ فون کا نشہ لگ جانے کے بعد نوجوان اس پر کنٹرول نہیں کرسکتے کہ انہیں فون پر کتنا وقت صَرف کرنا چاہیے اور وہ زیادہ تر اس کی چھوٹی اسکرین میں غرق رہتے ہیں۔ اس تحقیقی رپورٹ میں خبردار کیا گیا ہے کہ اس طرح کی لت لگنے سے دماغی صحت کے لیے سنگین نوعیت کے مسائل پیدا ہو سکتے ہیں۔