ڈاکٹروں کی غفلت یا قدرت کا کرشمہ؟

January 9, 2020 1:07 pm0 commentsViews: 31

کراچی، مردہ قرار دی گئی خاتون غسل کے دوران زندہ ہوگئیں
خاتون کو جب غسل دینے کیلئے لایا گیا اور جیسے ہی اْن پر گرم پانی ڈالا تو وہ اٹھ کر کھڑی ہوگئیں
سرد خانے میں50 سالہ رشیدہ بی بی کوغسل دینے والی خواتین نے خوف کے مارے دوڑ لگا دی
عباسی اسپتال میں ڈاکٹرز نے خاتون کو بغیر معائنے کے مردہ قرار دیکر ڈیتھ سر ٹیفکیٹ بھی جاری کیا
کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک)شہر قائد سے تعلق رکھنے والی خاتون غسل کے دوران اٹھ کھڑی ہوئیں جس کے بعد انہیں دوبارہ عباسی شہید اسپتال منتقل کردیا گیا۔تفصیلات کے مطابق رشیدہ بی بی کی عمر 50 برس ہے اور وہ گزشتہ ڈیڑھ سال سے فالج کے مرض میں مرض میں مبتلا ہیں، خاتون کو گزشتہ روز طبیعت خرابی کے باعث عباسی شہید اسپتال لایا گیا۔ڈاکٹرز نے طبیعت اور ٹیسٹ کی رپورٹس کو دیکھتے ہوئے خاتون کو اسپتال میں ہی داخل کرنے کا مشورہ دیا۔گذشتہ روز صبح ڈاکٹرز نے غفلت کا مظاہرہ کرتے ہوئے خاتون کو بغیر معائنے کے مردہ قرار دیا اور اْن کا ڈیتھ سرٹیفیکٹ بھی جاری کیا، اہل خانہ نے رشیدہ بی بی کو غسل دینے کے لیے سرد خانے منتقل کیا اور انہیں تقریباً 20 منٹ تک مورگیج ہاؤس میں رکھا گیا۔خاتون کو جب غسل دینے کے لیے لایا گیا اور جیسے ہی اْن پر گرم پانی ڈلا تو وہ اٹھ کر کھڑی ہوگئیں جس کے بعد وہاں موجود خواتین نے خوف کی وجہ سے دوڑ لگا دی۔اہل خانہ کے مطابق خاتون کو ہوش میں آنے کے بعد دوبارہ عباسی شہید اسپتال منتقل کردیا گیا۔