ایم کیو ایم ہمارے ساتھ ہو تو علیحدگی کی بات نہیں کرتی،وزیر اعلیٰ سندھ

January 14, 2020 12:45 pm0 commentsViews: 10

اب بھی اگر وہ ہمارے ساتھ آئے تو وہ باتیں بھول جائیں گے‘سید مراد علی شاہ کاصحافیوں کے سوال کا جواب
معدنی ذخائر پر پہلا حق صوبے کا ہے ، آئندہ گیس کی تقسیم آرٹیکل 158 کے مطابق کی جائے‘ تقریب سے خطاب
بدین (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ معدنی ذخائر پر پہلا حق اس صوبے کا ہے جہاں سے یہ دریافت ہو ،مشترکہ مفادات کونسل کی اکثریت نے رائے دی ہے کہ وفاق بات کرے تاکہ آئندہ گیس کی تقسیم آرٹیکل 158 کے مطابق کی جائے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدین میں ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر اسپتال میں فزیکل رہی بیلیشن سینٹر کا افتتاح کرنے کے موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ مشترکہ مفادات کونسل 8 کے اراکین میں سے 5نے ہمارے موقف کی حمایت کی۔ ایک سوال کے جواب میں وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ایم کیو ایم جب ہمارے ساتھ ہوتی ہے تو علیحدگی کی بات نہیں کرتی اور اب بھی اگر وہ ہمارے ساتھ آئے تو وہ باتیں بھول جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ اس سال کے بجٹ میں 20ارب روپے پبلک ہیلتھ کی اسکیموں کے لیے مختص کیے گئے ہیں تاہم نکاسی و فراہمی آب کے مسائل کے حل میں کچھ وقت لگے گا، ٹڈی دل کی روک تھام کا کام وفاقی محکمہ پلانٹ پروٹیکشن کا ہے ، ہم نے ان کو ایک کروڑ روپے کی گرانٹ دی ہے، چین اور یو اے ای سے بھی ہیلی کاپٹرمنگاکر اسپرے کروایا جائیگا۔انہوں نے کہا کہ میں انڈس والوں کو سیہون لانا چاہتا تھا لیکن ڈاکٹر سکندر میندھرو ان کو بدین لائے۔ انہو ں نے کہا کہ یہ جسمانی بحالی مرکز جہاں مصنوعی اعضا بنائے اور لگائے جاتے ہیں ، انہوں نے ڈاکٹرعبدالباری کو کہا آپ جب چاہیں ہم نرسنگ انسٹیٹیوٹ بناکر دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ نئے آنے والے ڈاکٹروں میں لگن کی کمی ہے، ہم کتنے ہی اچھے اسپتال بنالیں اگر ڈاکٹر نہیں ہوں تو عمارت بے کار ہے ، ہمیں نرسز اور ٹیکنیشن بھی چاہییں اور پلان بنانا ہے کہ کتنے ڈاکٹرزکس مہارت کے چاہییں۔