بلاول بھٹو نے منی لانڈرنگ کی رقوم سے جائیدادیں بنائیں شہزاد اکبر

February 14, 2020 11:57 am0 commentsViews: 3

ٹنڈو الہ یار میں ان پیسوں سے زرعی زمین خریدی گئی، کلفٹن میں 5 پلاٹ خریدے گئے جن کو بلاول ہاؤس کا حصہ بنایا گیا، معاون خصوصی
بلاول آپ اَن ٹچ نہیں ہیں کہ آپ سے کوئی ادارہ بھی سوال نہیں کرسکتا،یہ تو نیب کے سامنے جھوٹ بھی بول رہے ہیں،میڈیا سے گفتگو
اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبر نے دعویٰ کیا ہے کہ پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے منی لانڈرنگ کی رقوم سے جائیدادیں بنائیں، ٹنڈو الہ یار میں ان پیسوں سے زرعی زمین خریدی گئی، کلفٹن میں 5 پلاٹ خریدے گئے جن کو بلاول ہاؤس کا حصہ بنایا گیا، لاہور میں بلاول ہاؤس تعمیر کیا گیا اور دیگر زمینیں بھی خریدی گئیں، بلاول آپ اَن ٹچ نہیں ہیں کہ آپ کو کسی ادارے میں بلا کر سوال نہیں کیا جاسکتا،اگر عام شخص پولیس کے سامنے جھوٹ بولے تو اسے جیل میں بند کردیا جاتا ہے ا،یہ تو نیب کے سامنے جھوٹ بول رہے ہیں،تفتیش کاروں کو اگر تمام چیزیں دے دی جائیں اور وہ آپ کو کلیئر کردیں تو آپ آزاد ہوں گے۔جمعرات کو میڈیا سے گفتگو میںشہزاد اکبر نے بلاول بھٹو زرداری کے نیب میں طلب کرنے سے متعلق سوال پر رد عمل دیتے ہوئے کہا کہ بلاول کہتے ہیں مجھے کیوں بلایا گیا، ان کو مختلف کیسز کی تحقیقات کیلئے نیب نے طلب کیا تھا۔انہوںنے کہاکہ بلاول کو نیب نے جے وی اوپل اور اوپل 225 کیس میں تحقیقات کیلئے بلایا تھا جو سپریم کورٹ کی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم (جے آئی ٹی) نے نیب کے حوالے کیا تھا۔انہوں نے کہا کہ جے وی 225 کیس میں ان پر الزام ہے کہ زرداری گروپ آف کمپنیز نے اس کمپنی کے اکاؤنٹ میں ایک ارب 25 کروڑ روپے کی منی لانڈرنگ کی ہے۔شہزاد اکبر نے کہا کہ بلاول کی طرح میں آپ سے جھوٹ نہیں بولوں گا، یہ الزام ہی ہے جسے ثابت ہونا ہے، آپ عدالتوں میں جائیں، تاہم اس سے قبل آپ کو تحقیقاتی ایجنسیوں کے سامنے پیش ہونا پڑے گا۔انہوں نے چیئرمین پیپلز پارٹی پر الزام عائد کیا کہ بلاول نے منی لانڈرنگ کی رقوم سے جائیدادیں بنائیں، ٹنڈو الہ یار میں ان پیسوں سے زرعی زمین خریدی گئی، کلفٹن میں 5 پلاٹ خریدے گئے جن کو بلاول ہاؤس کا حصہ بنایا گیا، لاہور میں بلاول ہاؤس تعمیر کیا گیا اور دیگر زمینیں بھی خریدی گئیں۔