المناک واقعہ: خاتون کی لاش 12 سال فریزر میں رہنے سے ڈھانچہ بن گئی

February 14, 2020 1:18 pm0 commentsViews: 8

خاتون کے بچوں نے ماں کی میت میں لاش دفنانے کے بجائے فریزر میں رکھ کر فلیٹ کو تالہ لگادیا تھا
ماں کی لاش کو فریزر میں رکھنے والے بہن بھائی بھی ذہنی مریض تھے جو مرچکے تھے، متوفیہ کا باپ لاش پھینکتے ہوئے پکڑا گیا
کراچی (اسٹاف رپورٹر) گلستان جوہر تھانے کے علاقے گلشن اقبال بلاک 11 میں واقع اے جی پی آر بلڈنگ کے قریب کچرے سے خاتون کی ڈھانچہ نما لاش ملی ہے جو 12 سال تک فریزر میں رہنے کی وجہ سے ڈھانچہ بن گئی، جسے پولیس نے تحویل میں لینے کے بعد پوسٹ مارٹم کے لیے جناح اسپتال منتقل کر دیا۔ ایس ایچ او گلستان جوہر شاہجہاں لاشاری نے بتایا کہ خاتون کی شناخت 65 سالہ ذکیہ بی بی دختر محراج الحسن زیدی کے نام سے کرلی گئی، ہلاک ہونے والی خاتون فلیٹ نمبر بی 23/18 کریسینٹ کمپلیکس بلاک 11 گلشن اقبال کی رہائشی تھی۔ انہوں نے بتایا کہ خاتون کی لاش تقریباً 12 سال پرانی معلوم ہوتی ہے وجۂ موت کے تعین کے لیے لاش سے نمونے حاصل کر لیے، خاتون کے انتقال کے بعد ان کے بیٹے قیصر ریاض اور بیٹی شگفتہ ریاض نے دفنانے کے بجائے لاش فلیٹ میں ہی رہنے دی اور فریزر میں رکھ دی تھی اور فلیٹ کو تالا لگا دیا تھا۔ ایس ایچ او نے بتایا کہ تقریباً 4 ماہ قبل خاتون کے بیٹے قیصر ریاض کا انتقال ہو گیا تھا جبکہ بیٹی شگفتہ کا بھی تقریباً 10 روز قبل انتقال ہوگیا۔ ایس ایچ او نے بتایا کہ تقریباً 3 روز قبل خاتون کا بھائی محبوب عالم بہن کے فلیٹ میں صفائی ستھرائی کے لیے گیا تو فلیٹ کے فریزر میں ان کی بہن ذکیہ بی بی کی ڈھانچا نما لاش موجود تھی جس پر محبوب عالم بہن کی لاش فلیٹ سے نکال کر یونیورسٹی روڈ نیپا چورنگی کے قریب واقع اے جی پی آر بلڈنگ کے قریب کچرے میں پھینک دی۔ ایس ایچ او نے بتایا کہ محبوب عالم نے اپنے محلے داروں اور فلیٹ کی یونین کے نمائندوں کو بتایا کہ ان کی بہن کا فلیٹ سے ڈھانچا ملا ہے جسے وہ پھینک آئے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ خاتون کی لاش پھینکے جانے سے متعلق محلے داروں نے پولیس کو اطلاع دی جس پر پولیس کریسنٹ کمپلیکس پہنچی اور محبوب عالم کو حراست میں لے کر ان کی نشاندہی پر خاتون کی ڈھانچا نما لاش برآمد کرلی، ایس ایچ او نے بتایا کہ جاں بحق ہونے والی خاتون اور ان کا بیٹا بیٹی ذہنی مریض تھے اور وہ دونوں بھی مر چکے ہیں۔