…ٹیکس کیوں نہیں دیا … شادی کے مہنگے سوٹ بنانیوالوں کی شامت آگئی ٗ نوٹسز جاری

February 22, 2020 12:45 pm0 commentsViews: 8

ایف بی آر نے لاکھوں روپے وصول کرنیوالے 24کے قریب مہنگے ڈریس ڈیزائنرز کی نشاندہی کردی جن سے ٹیکس وصولی کی جائیگی
مہنگے جیولر ز اور مہنگا کھانا فراہم کرنے والے کیٹرنگ مالکان کیخلاف بھی گھیرا تنگ ہونا شروع ہوگیا
کراچی (نیوز ڈیسک) شادی کے مہنگے سوٹ فروخت کرنے والے ڈریس ڈیزائنرز کے خلاف ایف بی آر کا ایکشن، لاکھوں روپے وصول کرنے والے 24 کے قریب مہنگے ڈریس ڈیزائنر کی نشاندہی کردی گئی۔ ڈریس ڈیزائنرز کے بعد مہنگے جیولرز اور مہنگا کھانا فراہم کرنے والے کیٹرز کو بھی ٹیکس دائرے میں لانے کے لیے دائرہ تنگ کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا، ٹیکس نیٹ میں اضافے کے لیے ڈریس ڈیزائنرز کو نوٹس جاری کر دیے گئے۔ تفصیلات کے مطابق فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کی جانب سے ٹیکس نیٹ میں اضافہ کرنے کے لیے 24 مہنگے ڈریس ڈیزائنرز کی نشاندہی کی گئی ہے جن کے بارے میں کہا گیا ہے کہ یہ ڈریس ڈیزائنر ایک شادی کے سوٹ کی تیاری کا لاکھوں روپے وصول کرتے ہیں جبکہ ان ڈریس ڈیزائنرز کی جانب سے کسی قسم کا ٹیکس ادا نہیں کیا جاتا ہے، جس کے بعد فیڈرل بورڈ آف ریونیو ایف بی آر کے کمشنر ریجنل ٹیکس آفس کراچی کی جانب سے ڈریس ڈیزائنرز کو نوٹس جاری کیے گئے ہیں۔ ان ڈریس ڈیزائنرز میں ندا تاج، شیرناز، عائشہ احمد، وردہ سلیم، صنم چوہدری، ثانیہ مسکاتیا، کارٹیز بائے، پاشو، سلہوٹیز بائے ایش اینڈ عظمہ، ندا ایزویر، وقار جے خان، کلویلر لیزر، روزینہ منیب، عائشہ سرفراز، فریدہ قریشی، سلیحہ، ماہین، نتاشا کمال، بیسک، سارا ارشد گیلانی، آمنہ چوہدری، چکن کاری، ہائوس آف فرح، سبلی، زوری بائے، زینب فواد شامل ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے ایف بی آر کی جانب سے مہنگے زیورات تیار کرنے والے جیولرز اور مہنگا کھانا فراہم کرنے والے کیٹرز کے خلاف بھی کارروائی کرنے کا فیصلہ کیا جارہا ہے جو ابھی تک سیلز ٹیکس میں شامل نہیں ہیں۔