ٹرین سروس بند ہونے سے مسافروں میں افراتفری، کورونا بھول گئے

March 25, 2020 12:06 pm0 commentsViews: 2

کراچی کے ریلوے اسٹیشنز پر اندرون ملک جانے والوں کی بھیڑ لگ گئی
کورونا وائرس سے خوفزدہ ہونے کے بجائے اپنے اپنے آبائی علاقوں کو جانے کیلئے کوشاں
ریلوے کے اس اچانک فیصلے سے بدنظمی کی بدترین صورتحال پیدا ہوگئی ہے، منظور احمد رضی
کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) ملک بھر میں ٹرین آپریشن اچانک معطل کیے جانے کے باعث کراچی کے دونوں اسٹیشنز پر اندرون ملک جانے والے مسافروں کی بھیڑ لگ گئی اور لوگ ٹکٹس کے حصول کے لیے سرگرداں رہے، اس موقع پر وہ ’’کورونا وائرس‘‘ سے خوفزدہ ہونے کے بجائے اپنے اپنے آبائی علاقوں کو جانے کے لیے کوشاں نظر آئے۔ تفصیلات کے مطابق منگل کو پاکستان ریلوے کی جانب سے اچانک ملک بھر میں چلنے والی تمام اپ اینڈ ڈائون مسافر ٹرینیں منگل اور بدھ کی درمیانی شب 12 بجے سے 31 مارچ تک معطل کرنے کا فیصلہ سامنے آیا، جس کے بعد آخری ٹرین خیبر میل منگل کی رات ساڑھے 10 بجے کراچی سے پشاور روانہ ہوئی۔ قبل ازیں مذکورہ اعلان ہوتے ہی سٹی اسٹیشن اور کینٹ اسٹیشن پر افراتفری مچ گئی اور کراچی سے اندرون ملک جانے والی ٹرینوں سے روانہ ہونے والے مسافروں کی بڑی تعداد اسٹیشنز پر امڈ آئی اور پہلے سے بکنگ نہ کروانے والے مسافر ٹکٹس کے حصول کے لیے سرگرداں نظر آئے۔ تاہم سیکڑوں مسافروں کو مایوس لوٹنا پڑا۔ دریں اثناء ریلوے ورکرز یونین کے چیئرمین منظور احمد رضی نے پاکستان ریلوے کے اس اچانک فیصلے کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے بدنظمی کی بدترین مثال قرار دیا۔