کراچی میں سندھ کی سالمیت پر حملہ کیا گیا، وزیراعلیٰ سندھ

October 21, 2020 7:47 pm0 commentsViews: 7

وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ جزائر سے متعلق آرڈیننس کے خلاف پورا سندھ کھڑا ہے، آج جزائر سے متعلق وفاقی آرڈیننس کے خلاف قرار داد منظور ہورہی ہے، جبکہ اُن کو جزیروں کے نام تک نہیں پتا اور آرڈیننس لے آئے۔ نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے سندھ اسمبلی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں کسی کو غدار نہیں کہوں گا لیکن انھوں نے دھرتی سے ان کے پیار میں شک ضرور ڈال دیا، وفاقی حکومت کے آرڈیننس کے خلاف پورا سندھ سراپا احتجاج ہے، ان کی حب الوطنی پر نہیں لیکن ملک سے پیار پر شک ضرور ہوگیا۔

تفصیلات کے مطابق مراد علی شاہ نے کہا کہ سندھ کی سالمیت پر جو حملہ ہوا اس کے خلاف قرار داد لائیں گے، سندھ حکومت پہلے ہی اس آرڈیننس کے خلاف کام کررہی تھی اب مزید طاقت سے کریں گے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ جزائر سے متعلق وفاقی آرڈیننس غیر آئینی ہے، اپوزیشن کو چاہئے تھا کہ اسمبلی میں قرارداد پر بات کرتے۔

مراد علی شاہ نے کہا کہ انہیں مخالفت کرنی تھی کرتے، حمایت کرنی تھی کرتے، ترامیم لانی تھی لاتے، مگر اپوزیشن والے بہانہ بناکر اجلاس سے چلے گئے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ اجلاس سے جانے والوں کے دھرتی سے پیار پر شک ضرور ہوا ہے، ہم نے وفاق کو لکھ دیا یہ جزیرے سندھ کی ملکیت ہیں۔

مراد علی شاہ نے کہا کہ چیئرمین پیپلز پارٹی نے بھی اس پر واضح موقف دیا، بلاول بھٹو نے جلسے کے موقع پر کہا کہ آرڈیننس واپس لیں، میں واضح طور پر کہنا چاہتا ہوں ہم نے کوئی این او سی نہیں دیا۔ انہوں نے کہا کہ وفاق کے لوگ کہتے ہیں ہم جزائر اٹھاکر اسلام آباد تھوڑی لےجائیں گے، میں کہتا ہوں لےجاؤ ایک انچ زمین بھی لےجاؤ اگر ہمت ہے۔