سندھ میں آنیوالے چینی باشندوں کیلئے خصوصی سیکورٹی پلان تیار

August 8, 2015 4:48 pm0 commentsViews: 37

پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے پر کام کرنیوالے چینی ماہرین کنکریٹ باونڈری وال کے اندر کام کریں گے
خصوصی کیمرے‘ واک تھروگیٹس نصب ہونگے‘ مزدوروں کی سخت چیکنگ ہوگی‘ بڑی تعداد میں سیکورٹی اہلکار تعینات کئے جائیں گے
کراچی( کرائم ڈیسک) پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے پر کام کے لئے سندھ آنے والے چینی باشندوں کی سیکورٹی کی20 صفحات پر مشتمل ایس او پی تیار کر لی گئی۔ ذرائع کے مطابق چینی ماہرین کی سیکورٹی کے لئے پروینشنل فارنر سیکورٹی سیل پہلے ہی سی پی او میں قائم کر دیا گیا ہے۔ سیکورٹی کے لئے ضلعی وسطیٰ سے بھی ڈسٹرکٹ فارنر سیکورٹی سیل قائم کئے جائیں گے۔ سیکورٹی سیل ہر آنے والے مہمان کی رجسٹریشن کا پابند ہوگا۔ سیکورٹی سیل مہمانوں سے مطلوبہ معلومات حاصل کرے گا اور اس معلومات پر ڈیٹا بیس قائم کرے گا۔ سیکورٹی سیل تمام مہمانوں کو بائیو میٹرک سسٹم پر رجسٹرڈ کرانے کا بھی پابند ہوگا۔ چینی شہریوں کی رجسٹریشن کے بعد سیل تمام شہریوں کو احتیاطی تدابیر کا ایک کتابچہ فراہم کرے گا۔ کتابچہ انگریزی اور چینی زبان میں تحریر ہوگا۔ چینیوں کو فول پروف سیکورٹی فراہم کی جائے گی تمام چائنیز باشندے کنکریٹ وال میں رہ کر کام کریں گے۔ وال پر خاصہ دار تاروں کا جال ہوگا۔ تھوڑے تھوڑے فاصلے پر سرچ لائٹس ہونگی۔ بائونڈری وال اور اطراف کی نگرانی کے لئے360 ڈگری تک گھومنے والے کیمرے نصب ہونگے۔ چار دیواری کے اندر اور باہر جانے کے تمام راستوں پر واک تھرو گیٹس ہونگے۔ چینی باشندوں کے ساتھ کام کرنے والے مقامی مزدوروں کی روزانہ کی بنیاد پر کلیئرنس لازمی ہوگی۔ بائونڈری وال کے اندر اور باہر2 لیئرز میں سیکورٹی اہلکار تعینات ہوں گے جب کہ کسی بھی نا خوشگوار واقعے سے نمٹنے کے لئے پولیس کمانڈوز قریبی مقام پر موجود رہیں گے۔ تمام سیکورٹی سیزل کے سربراہ اپنے دفاتر میں کنٹرل روم قائم کریں گے تا کہ تمام قانون نافذ کرنے والے اور حساس ادارے باہم رابطے میںرہیں۔

Tags: