عدالت نے محکمہ تعلیم سے بے ضابطگیوں پر جواب طلب کر لیا

August 18, 2015 4:32 pm0 commentsViews: 10

رشوت نہ دینے والے9 افراد کوبھرتی کا نوٹیفکیشن جاری نہیں کیا گیا، درخواست میں موقف
کراچی (اسٹاف رپورٹر)سندھ ہائی کورٹ نے محکمہ تعلیم میں بے ضابطگیوں پر سندھ ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ سے 8 جواب طلب کر لیا ہے۔ سندھ ہائی کورٹ کے جسٹس منیب اختر کی سر براہی میں 2رکنی بنچ نے در شہوار کی جانب سے دائر درخواست کی سماعت کی۔ درخواست میں مؤقف اپنایا گیا تھا کہ ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ میں مختلف آسامیوں پر امتحانات دینے اور تمام مراحل عبور کرنے والے 9 افرادکو نوٹی فکیشن نہیں دیا جا رہا جبکہ 101افراد کو نوٹی فکیشن جاری کر دیے گئے ہیں۔ ایڈوکیٹ شعاع النبی نے مؤقف دیتے ہوئے کہا کہ ایک طرف 101 افراد کو بھرتی کر دیا گیا ہے تو ان 9افراد جن کے نام ارم ناز، عدنان غلام جیلانی ، لیاقت نثار، در شہوار ، ثمینہ ، کشور اور صدف کو نوٹی فکیشن نہ دینے کی صرف ایک ہی وجہ نظر آتی ہے کہ یہ افراد رشوت دینے سے قاصر ہیں ۔ تاہم پیر کو سندھ ہائی کورٹ نے اس معاملے پر سندھ ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ سے 8ستمبر تک جواب طلب کر لیا ہے۔

Tags: