سندھ ہائیکورٹ نے ڈیفنس ویو کو مسمار کرنے کا حکم دیدیا

September 12, 2015 2:13 pm0 commentsViews: 42

18 ستمبر تک غیر قانونی طور پر قائم کردہ 11 سو مکانات مسمار نہ ہوئے تو ایس بی سی اے جرمانے کیلئے تیارر ہے
عدالتی حکم سے سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی میں ہنگامی کیفیت‘ اتھارٹی کے افسران کی نیند اڑ گئی
کراچی( نیوز ڈیسک) سندھ ہائی کورٹ نے زمین کے ایک مقدمے میں سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کا موقف سننے اور تحریری شواہد جمع کرانے کے بعد 11 سو مکانات پر مشتمل ڈیفنس ویو کو منہدم کرنے کے احکامات صادر کردیئے ہیں‘ عدالت عالیہ نے سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے قائم مقام ڈائریکٹر جنرل ممتاز حیدر کو ہدایت کی ہے کہ اگر انہوں نے ڈیفنس ویو میں غیر قانونی اقدامات کے نتیجے میں تعمیرات کو 18ستمبر تک منہدم نہ کیا تو بھاری جرمانے کیلئے تیار رہیں عدالت عالیہ کے اس فیصلے کے بعد سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی میں ہنگامی و ایمر جنسی کی کیفیت قائم ہوگئی ہے اور بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے افسران و ملازمین کی نیندیں حرام ہوگئیں ہیں جو ڈیفنس ویو میں قائم11 سو مکانات کو منہدم کرنے کیلئے سوچ بچار کا شکار ہوگئے ہیں زمین کے ایک دوسرے تنازع میں سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے زیر انتظام محکمہ ماسٹر پلان نے بلڈر حسین لاکھانی رہائشی منصوبے ڈیفنس ویو کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے موقف اختیارکیا تھا کہ منصوبے قواعد ضوابط پورے نہ کئے جانے کی وجہ سے محکمہ ماسٹر پلان پورے ڈیفنس ویو کالے آئوٹ پلان منسوخ کرچکا ہے‘ لہٰذا لے آئوٹ پلان منسوخ ہوجانے کے بعد منصوبے میں شامل11 سو مکانات غیر قانونی ہوچکے ہیں۔

Tags: