چھیپا مرکز کو پلاٹ سے قبضہ فوری ختم کرنے کا حکم

October 10, 2015 4:41 pm0 commentsViews: 31

لائنز ایریا میں واقع مرکز کے اطراف میں کھڑی ایمبولینس اور دسترخوان دو ماہ میں ہٹا دیے جائیں، سندھ ہائی کورٹ
چھیپا کی انتظامیہ کی جانب سے ہراساں کیے جانے کی درخواست مسترد، پلاٹ نجی ملکیت ہے، عدالت عالیہ
کراچی( اسٹاف رپورٹر) سندھ ہائی کورٹ نے ایف ٹی سی پل کے اطراف میں رمضان چھیپا کے ایمبولینس اور دستر خوان کو دوماہ میں ہٹانے کا حکم دے دیا ہے۔ سندھ ہائیکورٹ میں چھیپا کی جانب سے درخواست دائر کی گئی تھی کہ لائنز ایریا میں ایف ٹی سی پل کے نزدیک ان کے مرکز کو ہٹانے کا حکم انتظامیہ کی جانب سے دیا گیا ہے ہم ناداروں کھانا اور ایمولینس سروس فراہم کرتے ہیں جو کہ حکومت کا کام ہے اور ہمیں یہ کام بھی نہیں کرنے دیا جارہا ہے درخواست کی سماعت سندھ ہائیکورٹ کے جسٹس عرفان سعادت کی سربراہی میں دورکنی بنچ نے کی عدالت میں بورڈ آف ریونیو کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ جس پلاٹ پر چھیپا مرکز قائم ہے اس کے مالک کی درخواست پر رمضان چھیپا کو نوٹس جاری کئے گئے ہیں عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد حکم دیا ہے کہ چھیپا اپنا مرکز اس پلاٹ کے سامنے سے دو ماہ میں ہٹالیںکیونکہ یہ نجی ملکیت ہے۔

Tags: